iran-japan

ایران ایٹمی ہتھیار بنانے یا اُن کے استعمال کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا:آیت اللہ خامنہ ای

EjazNews

جاپان کے وزیراعظم شینزوایبے ان دنوں ایران کے دورے پر ہیں۔ جس کا مقصد امریکہ اور ایران کے درمیان بڑھتی کشیدگی میں کمی لانا ہے۔ان کے دورے سے پہلے یہ قیاس آرائیاں کی جارہی تھیں کہ وہ ایران نہیں جائیں گے کیونکہ شیزوبے کے ایران کے دورے سے پہلے امریکی صدر نے جاپان کا دورئہ کیا تھا۔
ایران کے صدر حسن روحانی سے ملاقات کے بعد مشترکہ نیوزکانفرنس میں جاپانی وزیر اعظم نے کہا تھاکہ جاپان خطے میں کشیدگی کو کم کرنے کے حوالے سے ہر ممکن اقدام کرے گا۔انہوں نے کہا کہ ایران ایٹمی توانائی کے عالمی ادارے آئی اے ای اے کے ساتھ تعاون کر رہا ہے اور توقع ہے کہ آئندہ بھی یہ تعاون جاری رہے گا۔ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا کہ ایران، امریکہ کےخلاف اور خطے میں جنگ کا خواہاں نہیں لیکن جارحیت کی صورت بھرپورجواب دینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔صدر حسن روحانی نے کہا کہ خطے میں حالیہ کشیدگی کی اصل جڑایران مخالف امریکی معاشی جنگ ہے۔ جب تک امریکہ کواس جنگ سےروکا نہیں جاتا ، خطے اور دنیا میں مثبت تبدیلیاں رونما نہیں ہوسکتیں۔انہوں نے کہا کہ ایران عالمی طاقتوں کے ساتھ طے پانے والے ایٹمی معاہدے پر عملدرآمد میں یقین رکھتا ہے اور ہمارے آئندہ اقدامات بھی اس بین الاقوامی معاہدے کے اصولوں کے مطابق ہوں گے۔صدرروحانی نے کہا کہ ہم جاپانی کی جانب سے ایرانی تیل کی خریدای سمیت تعلیمی اور ثقافتی شعبوں میں تعاون اور باہمی مالی مسائل کے حل پر جاپان کی دلچسبی کا خیر مقدم کرتے ہیں۔
غیر ملکی میڈیا کے مطابق شیزو بے نے کہا ہے کہ ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نےانہیں یقین دلایا ہے کہ ایران ایٹمی ہتھیار بنانے یا اُن کے استعمال کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا۔

یہ بھی پڑھیں:  ٹوئٹر کو روس کی دھمکی