شمالی وزیرستان میں شہادت پانے والےسرکاری اعزاز کے ساتھ سپرد خاک

EjazNews

گزشتہ روز تحصیل دتہ خیل کے علاقے خڑقمر میں سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر بم دھماکہ ہوا جس میں 3افسروں سمیت 4سکیورٹی اہلکار شہید ہو گئے،چار دیگر زخمی ہوئے۔ یہ حملہ دہشت گردوں کی جانب سے سکیورٹی فورسز پر کیا گیا تھا۔ شہداء میں لیفٹیننٹ کرنل رشید کریم، میجر معیز، کیپٹن عارف اللہ اور لانس حوالدار ظہیر شامل تھے۔زخمیوں کوملٹری ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا۔ یہاں یہ بات توجہ طلب ہے کہ گزشتہ ایک ماہ کے دوران 10سکیورٹی اہلکار شہید جبکہ 35اہلکار زخمی ہوچکے ہیں۔
اس واقعہ کی ہر طرف سے مذت دیکھنے کو ملی۔ صدر مملکت، وزیراعظم عمران خان، اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سمیت چوٹی کے رہنمائوں نے اس واقع کی شدید مذمت کی اور پاک فوج کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کیا۔

شمالی وزیرستان میں ہونے والے اس قسم کے واقعات کا شروع میں ہی تدارک کر لینا چاہیے کیونکہ افغان سرحد جس پر پہلے ہم نے کبھی فوج نہیں رکھی تھی وہا ں بھی فوج مصرو ف ہے، بلوچستان میں بھی اور ہمسایہ ملک بھارت سے مذاکرات کیلئے وزیراعظم عمران خان اپنی تہی پوری کوشش کر رہے ہیں تاکہ امن کے راستے کھلیںلیکن سرحد کے پار والے کی جیت تو ہوئی ہی پاکستان دشمنی پر ہے۔ اب ہماری یہ والی سرحد پر بھی فوج مصروف ہونے کے خطرات ہیں اس لیے شمالی وزیرستان کے معاملات ہمیں کوشش کرنی چاہیے طاقت کے کم استعمال سے ہی کسی طرح حل ہو جائیں۔

وزیراعظم عمران خان کی طرف سے کیا گیا ٹویٹ
یہ بھی پڑھیں:  علیم خان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 30اپریل تک توسیع