50لاکھ معذور افراد کی مدد احساس پروگرام کے تحت ہوگی

EjazNews

احساس پروگرام سے وزیراعظم عمران خان نے بہت سے امیدیں وابستہ کر رکھی ہیں ۔ اس پروگرام کے تحت بہت سے پروگرامو ں کا اعلان بھی کیا گیا ہے کہ یہ یہ یہ کیا جائے گا۔ لیکن ابھی عملدرآمد کی باری آنی ہے۔ اسی سلسلے میں وزیراعظم عمران خان کی مشیر برائے سماجی تحفظ ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے پریس کانفرنس کی ہے جس میں ان کا کہنا تھا کہ ملک مالی مشکلا ت کا شکار ہے تمام وزارتوں نے اپنے بجٹ میں کٹوتی کا اعلان کیا ہے۔اکثریتی محکمہ جات نے بجٹ میں اضافے کی درخواست نہیں کی ۔ تاہم سماجی تحفظ کے پروگرام کا بجٹ دو گنا کر دیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں50لاکھ کے قریب افراد کسی نہ کسی طرح کی معذوری کا شکار ہیں ۔ان میں سب سے زیادہ تعداد نابینا افراد کی ہے۔ ہمارا ٹارگٹ ایسے تمام افراد کی بحالی اور فلاح ہے۔ان کے مطابق نابینا افراد کو چھڑی، جسمانی معذوری کے شکار افراد کو وہیل چیئرز اور سماعت سے م حروم افراد کو آلہ سماعت حکومت مفت فراہم کرے گی۔ان کا کہنا تھا کہ ان افراد کو انصاف کارڈ بھی مہیا کیا جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم کا تحفظ پروگرام ستمبر میں شروع ہو جائے گا۔ سماعت سے محروم افراد کو دودن کے نوٹس پر آلہ مفت مہیا کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  اداروں کی جانب سے غیرمشروط اور غیرمعمولی تعاون کے باوجود حکومت ناکام رہی: میاں شہباز شریف

حکومت کے پاس اگر 50لاکھ افراد کی تعداد موجود ہے تو ضرور ان تک رسائی کا بھی کوئی نہ کوئی ذریعہ موجود ہو گا۔ یہ ایک اچھا اقدام ہے ہم نے دیکھا کہ نابینا افراد پر لاٹھی چارج کیا گیا۔ محکمہ جات میں ان کے کوٹے پر بھرتی ہوئے کئی تندرست اشخاص کو بھی دیکھا۔ اگر واقعی احساس کے تحت ان کیلئے کچھ کرنے کی ضرورت ہے تو وہ ان کو اپنے پائوں پر کھڑا کرنے کی ضرورت ہے۔ تاکہ وہ اپنے معیشت کو مضبوط بنا سکیں۔ اور یہی مطالبہ لیے وہ سڑکوں پر آکر لاٹھیاں کھاتے رہے ہیں۔