وزیراعظم کی وفاقی وزیر زرتاج گل کو خط واپس لینے کی ہدایت

EjazNews

گزشتہ روز ٹی وی چینلز سے یہ خبریں منظر عام پر آرہی تھیں کہ وفاقی وزیر زرتاج گل نے اپنی لاہور میں تعینات بہن شبنم گل کو ڈائریکٹر نیکٹا تعینات کر دیا ہے۔ جیسے یہ خبر نشر ہوئی اس کے بعد سوشل میڈیا پر طوفان برپا ہو گیا ۔
وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور نعیم الحق نے ایک ٹویٹ کیا ہے جس میں انہوں نے لکھا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے وفاقی وزیر زرتاج گل کو ہدایت کی ہے کہ وہ نیکٹا کو لکھا گیا اپنا خط واپس لیں۔ انہوں نے لکھا ہے کہ وزیر کی جانب سے نیکٹا کو لکھا جانے والا خط پی ٹی آئی کے اصولوں کیخلاف ہے۔ پی ٹی آئی نے ہمیشہ اقربا پروری کی مخالفت کی ہے، پی ٹی آئی حکومت میں کوئی بھی شخص اپنے عہدوں کو استعمال کرتے ہوئے اپنے رشتہ داروں، دوستوں کو نہیں نواز سکتا۔

سوشل میڈیا پر زیر گردش خط

اس سے بھی زیادہ دلچسپ بات آپ ملاحظہ کیجئے کہ نیکٹا نے جو اعلامیہ کیا ہے اس کے مطابق وفاقی وزیر زرتاج گل نے نیکٹا کو کوئی خط ہی نہیں لکھا۔ جو خط زیر بحث ہے وہ زر تاج گل کے پرنسپل سٹاف اسر نے سیکرٹری داخلہ کو لکھا تھا۔اب نیکٹا کی یہ وضاحت شاید نعیم الحق صاحب کو پتہ نہیں ہے یا پھر نیکٹا وہ چالاکی دکھا رہا ہے جو ہم کسی بھی بڑے آدمی کے ایسے اقدام کرنے کے بعد دیکھتے ہیں۔
اب صورتحال یہ تھی کہ گزشتہ روز سوشل میڈیا پر پی ٹی آئی کی حکومت کو سارا میڈیا آہنی ہاتھوں سے لے رہا تھا۔ زرتاج گل کی بہن لاہور کالج فاروویمن یونیورسٹی میں شعبہ بین الاقوامی تعلقات میں بطور اسسٹنٹ پروفیسر گریڈ 18میں فرائض انجام دے رہیں تھیں۔تاہم انہیں تین سال کی ڈیپوٹیشن پر گریڈ 19میں بطور ڈائریکٹر نیکٹا تعینات کر دیا گیا۔ ڈائون نیوز نے نیکٹا کے بارے میں ایک خبر نشر کی جس میں نیکٹا کے نوٹیفکیشن کے مطابق لاہور کالج فاروویمن کی اسسٹنٹ پروفیسر کی خدمات نیکٹا میں بطور ڈائریکٹر گریڈ 19ڈیپوٹیشن پر انہیں درکار ہیں۔

نعیم الحق کی جانب سے کیا گیا ٹویٹ

سوشل میڈیا پر شبنم گل کی ذاتی زندگی کے بارے میں ، ان کی پڑھائی کے بارے میں اور بہت سے نت نئے امور سامنے آرہے ہیں۔ان کی پی ایچ ڈی مکمل ہے یا نہیں ہے ابھی یہ سوشل میڈیا پر بہت کچھ سامنے آرہا ہے۔ ان سب میں وفاقی وزیر برائے انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی نے اپنی ٹویٹ میںاپنی وفاقی وزیر کی بہن کی حمایت میں لکھا ہے کہ شبنم گل دہشت گردی اور وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے (فاٹا) کی پی ایچ ڈی سکالر ہیں اور انہیں انٹرویو کے بعد ہی نیکٹا میں تعینات کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:  فریال تالپور اور آصف زرداری عدالت میں پیش