اپنے اثاثے ظاہر کر یں یہ سب کیلئے بہتر ہے:وزیراعظم عمران خان

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے اپنے 2منٹ 9سیکنڈ کے ریکارڈڈ بیان میں کہا ہے کہ ’’میں آج آپ سے ایک اہم مسئلے پر بات کرنا چاہوں 22کروڑ پاکستانیوں میں سے صرف 1فیصد پاکستانی ٹیکس دیتے ہیں۔یعنی صرف 1فیصد پاکستانی 22کروڑ پاکستانیوں کا بوجھ اٹھا رہے ہیں یہ ناممکن ہے۔ کوئی بھی ملک اپنے عوام کی خدمت کر ہی نہیں سکتا ۔ لوگ ٹیکس نہیں دیتے اس وجہ سے نہ ہم لوگوں کیلئے ہسپتال بنا سکتے ہیں نہ بچوں کیلئے سکول بنا سکتے ہیں۔نہ انفراسٹرکچر ٹھیک کر سکتے ہ یں۔ قرضے لینے پڑتے ہیں حکومت کو ۔ اسی لیے ہم اثاثے ڈکلیئر کرنے کی سکیم لے کر آئے ہیں۔ یہ سب سے آسان سکیم ہے یہ آپ کے پاس ایسا موقع مل رہا ہے جو 30جون کے بعد نہیں ملے گا۔ اداروں کے پاس ساری انفارمیشن آچکی ہے اور آرہی ہے ۔جتنے پاکستانیوں کے باہر اثاثے ،اکائونٹس ہیں۔ زیادہ اچھا ہے آپ اپنے اثاثوں کو ظاہر کر دیں اس سے یہ ہوگا کہ ہم اپنے ملک کو ترقی دے سکتے ہیں، غریبوں کی مدد کر سکتے ہیں۔ہم اپنے بچوں کا مستقبل ٹھیک کر سکتے ہیں ہم اپنے غریب لوگوں کو ٹھیک کر سکتے ہیں۔ سب سے اچھی بات ہے کہ آپ سکون کی نیند سو سکتے ہیں، آپ کو کوئی ادارہ تنگ نہیں کرے گا یہ سب کیلئے اچھا ہے۔آخر میں جو سب سے اچھی بات ہے اس وقت ہمارے ملک پر جو مشکل وقت آیا ہوا ہے معاشی طور پر اللہ ہمیں اس سے بھی نکال دے گا۔ میں آپ کو اس بات کی گارنٹی دیتا ہوں کہ یہ آپ کا پیسہ آپ لوگوں پر ہی خرچ ہوگا۔اور میں اس بات کی بھی گارنٹی دیتاہوں کہ میں یہ آپ کا پیسہ چوری نہیں ہونے دوں گا۔‘‘

وزیراعظم عمران خان مدینہ منورہ میں نوافل ادا کر رہے ہیں

او آئی سی اجلاس میں شرکت کیلئے وزیراعظم عمران خان سعودی عرب میں ہیں۔ وزیراعظم کا یہ دورۂ تین روزہ ہے۔ وزیراعظم نے سعودی عرب پہنچنے کے بعد روضہ رسول پر حاضری دی۔

یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم کا غربت کے خاتمے کیلئے پروگرام کا آغاز

وزیراعظم عمران خان 14ویں اسلامی سربراہی کانفرنس میں شرکت کریں گے۔وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی پہلے سے ہی اس کانفرنس میں شرکت کیلئے وہاں موجود ہیں۔