fawad

چلیں ہیں تو منزل مل ہی جائے گی

EjazNews

وفاقی وزیربرائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری جب سے اس منسٹری میں گئے ہیں پورے ملک میں ان کی خاص پہچان بنتی جارہی ہے۔ شاید انفارمیشن منسٹری میں رہتے ہوئے وہ کبھی اتنا نام نہ کماتے ۔ پہلے انہوں نے رویت ہلال کمیٹی کے ساتھ قمری کیلنڈر کا معاملہ اٹھایا جو کہ ایک خالصتاً مذہبی معاملہ ہے۔ قمری کیلنڈر بنانے کا مخالف کوئی بھی نہیں ہے مفتی منیب الرحمن بھی قمری کیلنڈر کے مخالف نہیں ہوں گے۔ لیکن جہاں تک عید ،رمضان کا معاملہ ہے تو چاند کو آنکھ سے دیکھ کر ہی رمضان اور عید کی ابتداءہوتی ہے یا پھر مہینہ خود بخود ختم ہو جائے تو نئے مہینے کے مطابق عملدآمد کیاجاتا ہے۔ سائنس اور ٹیکنالوجی جتنی چاہے ترقی کر جائے لیکن کچھ اصول اسلام نے بنائے ہیں جن پر عمل پیرا ہونا ہمیشہ سے ضروری رہتا ہے۔ سعودی عرب نے بھی قمری کیلنڈر بنایا ہے لیکن اطلاعاً عرض ہے کہ وہاں بھی رویت ہلال کمیٹی موجود ہوتی ہے۔ اور بات ہے ان کے پاس جدید ترین دور بینیں ہوں یا پھر ہمارے شہروں کی طرح پلوشن کم ہو یہ معاملات بالکل مختلف نوعیت کے ہیں۔

چاند کا معاملہ تو ابھی عید تک چلتا ہی رہے گا لیکن وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کا سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر ایک نیا بیان سامنے آیا جس میں ان کا کہنا ہے کہ قمر کیلنڈر کے بعد اگلا چیلنج موبائل فون کے ذریعے ادائیگیوں کا ہے۔ ٹیکنالوجی کی ترقی کیلئے ادائیگی کا آسان ہونا لازمی ہے۔ انشاءاللہ چند ماہ میں بس کے کرائے ، گاڑی کی خریدنے تک ادائیگی موبائل فون کے ذریعے سے ہو گی۔
اب یہ اقدام بہت اچھا ہے کہ آپ گھر بیٹھے اپنی تمام ادائیگیاں کر سکیں لیکن یہ کتنا موثر اور کتنا کارآمد ہو گا اس کیلئے چند ماہ ابھی انتظار کرنا پڑے گا۔
اس کے ساتھ ساتھ وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اگست کے مہینے کو سائنس و ٹیکنالوجی کا مہینہ منانے کیلئے بھی کوشاں ہیں۔پاکستان میں سائنس میلے کا بھی انعقاد کیا جارہاہے جو ایک اچھا اقدام ہے ۔ ایسے میلے یورپ میں کئی صدیاں پہلے منعقد ہو نا شروع ہو ئے تھے۔ لیکن دیر آید درست آید ۔ وفاقی وزیر سے آپ ان کے اقدامات کی وجہ سے جتنے مرضی اختلاف کر لیں لیکن ایک بات کو ان کو کریڈیٹ آپ کو دینا پڑے گاوہ یہ کہ پاکستانیوں کو یہ تو پتہ چل گیا کہ اس ملک میں سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کی وزارت بھی ہوتی ہے اور اس کا ایک وزیر بھی ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  اگرکسی کو غلط فہمی ہےکہ کسی کی آمد اور دھرنے سے حکومتیں چلی جاتی ہیں تو ہمارا تجربہ زیادہ ہے