برطانوی وزیراعظم تھریسامے کا مستعفی ہونے کا اعلان

EjazNews

برطانوی وزیراعظم تھریسامے نے اعلان کر دیا ہے کہ وہ 7جون کو اپنے عہدے سے مستعفی ہو جائیں گی۔ ساتھ ہی وہ پارٹی میں اپنا عہدہ بھی چھوڑ دیں گی۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق برطانوی وزیراعظم تھریسامے نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ بریگزٹ معاہدے پر اپنی ناکامی کو تسلیم کرتے ہوئے استعفیٰ دے رہی ہیں۔ وہ ملک کے بہترین مفاد میں استعفیٰ دے رہی ہیں۔ نیا وزیراعظم ملک کوبہتر طریقے سے چلائے۔ میں ان کے ساتھ کھڑی ہوں ایک روشن مستقبل کیلئے۔ اس ملک کی بہتری کیلئے۔ میں برطانوی تاریخ کی دوسری وزیراعظم ہوں لیکن آخری نہیں ہوں۔ برطانوی وزیراعظم اپنے استعفیٰ کا اعلان کرتے ہوئے آبدیدہ ہو گئیں اور ساتھ ہی ان کے الفاظ تھے وہ اپنے ملک سے محبت کرتی ہیں۔
برطانوی وزیراعظم کو بریگزیٹ ڈیل میں ناکامی پر تنقید کا سامنا تھا۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ میں بطور وزیراعظم بریگزیٹ ڈیل پر ارکان کو قائل کرنے میں ناکام رہی ہوں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ بطور جمہوری لیڈر عوام کی رائے کا احترام اور نفاذ ان کی ذمہ داری تھی۔
یاد رہے برطانوی وزیراعظم تھریسامے کی جانب سے تیار کردہ مسودہ برطانوی اراکین پارلیمنٹ تین مرتبہ مسترد کرچکے ہیں۔ اس پر یورپی یونین اور برطانیہ میں تو اتفاق تھا لیکن برطانوی پارلیمنٹ سے اس کی منظوری ممکن نہ ہو سکی۔
ڈیوڈ کیمرون کے دور حکومت نے 2016ءمیں 43سال کے بعد ریفرنڈم میں 52فیصد برطانوی عوام نے یورپی یونین سے علیحدہ ہونے کے حق میں جبکہ 48فیصد نے حصہ رہنے کے حق میں ووٹ دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:  چینی صدر نے کرونا وائرس کو شیطان کا نام دے دیا