نوجوان کی دلہن کے بغیر انوکھی شادی

EjazNews

انڈین میڈیا نے گزشتہ روز ایک ایسی سٹوری فائل کی ہے جو باعث حیرت بھی ہے اور دلچسپ بھی ۔ گجرات کے علاقے ہمت نگر کے 27سالہ نوجوان اجے باروت ذہنی معذورہیں اس وجہ سے کوئی بھی لڑکی ان سے شادی کرنے کیلئے تیار نہیں تھی۔
لیکن ماں باپ کی خواہش تھی کہ بیٹے کی شادی بڑی دھوم دھام سے ہو اور ذہنی معذوری اپنی جگہ لیکن شادی کا چاہ تو اجے میں بھی تھا۔ اس کا حل اجے کے خاندان والوں نے یہ نکالا کہ اجے کی باقاعدہ شادی کی رسومات ادا کی جائیں گی۔ انہوںنے شادی کارڈ چھپوائے، اپنے تمام رشتے داروں کو دعوت دی۔
اس دوران ایک اور دلچسپ واقع پیش آیا کہ اسی خاندان میں سے ایک قریبی رشتہ دار لڑکی ڈرامائی طور پر دلہن بننے کیلئے تیار ہو گئی لیکن دلہا میاں نہ مانے۔ بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق گجراتی رسم و رواج کے مطابق مہمانوں کیلئے کھانوں اور میوزیکل نائٹ کا اہتمام کیا گیا۔ بارات میں پیسے بھی نچھاور کیے گئے۔ سٹیج پر پھولوں کی سیج بنائی گئی، 2سو سے زائد مہمانوں نے شرکت کی اور دولہا کو باقاعدہ تحائف بھی دئیے۔ اہل خانہ لڑکے کو شیروانی اور گولڈن رنگ کاقلع پہنا کر بگی میں بٹھا کر بارات لے کر دولہا کے ننھیال پہنچے جہاں ان کا باقاعدہ استقبال بھی کیاگیا۔

یہ بھی پڑھیں:  پانی میں ڈوبنے سے دماغی حالت ٹھیک ہو گئی
اجے کو تلک لگا کر استقبال کیا جارہا ہے

اس موقع پر اجے کے والد کا کہنا تھا کہ ان کا بیٹا پیدائشی طور پر معذور ہے، اسے شروع میں بولنے میں مشکل پیش آئی اور بعد میں وہ بولنا ہی چھوڑ گیا۔ بیٹے کی خواہش تھی کہ اس کی شادی کی تقریب شاندار طریقے سے کی جائے ۔ہم نے اپنے بیٹے کی خواہش کو پورا کر دیا۔