aleem-khan

علیم خان کو ضمانت مل گئی

EjazNews

6فروری کو نیب لاہور نے آمدن سے زائد اثاثہ جات اور آف شور کمپنیوں کیس میں صوبائی پنجاب کے صوبائی وزیر عبدالعلیم خان کو گرفتار کیا تھا۔ علیم خان نے اپنی گرفتاری کے بعد وزارت سے استعفیٰ دے دیا تھا۔
علیم خان کی درخواست پر جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے سماعت کی۔
عدالت نے جب پراسیکیوٹر سے استفسار کیا کہ بتایا جائے کہ اب تک تفتیش میں کیا ملا ہے۔ جس پر پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ علیم خان نے بیرون ممالک میں غیر قانونی ٹرانزیکشنز کی ہیں ۔ جس پر علیم خان کے وکیل کا کہنا تھا کہ ان کے موکل نے جو اثاثے بنائے او ررقوم منتقل کیں وہ ڈکلیئر ہیں ان پر کرپشن اور ناجائز اثاثوں کا کوئی ٹیکس نہیں۔جب عدالت نے نیب سے کہا کہ علیم خان کیخلاف ریفرنس دائر کیا جائے جس کے جواب میں نیب کا موقف تھا کہ ریفرنس جلد دائر کیا جائے گا۔ جس پر عدالت نے کہا کہ جب تفتیش مکمل ہو گئی ہے تو کسی شخص کو غیر معینہ مدت تک جیل میں نہیں رکھا جاسکتا۔ اس لیے علیم خان کی ضمانت منظور کی جاتی ہے۔عدالت نے علیم خان کو ایک کروڑ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  گلگت بلتستان کی حکومت نے کروناوائرس کیلئے بہترین اقدامات کیے:معاون خصوصی برائے صحت

یاد رہے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں گرفتار علیم خان کو جوڈیشل ریمانڈ مکمل ہونے پر گزشتہ روز احتساب عدالت میں پیش کیا گیا۔ عدالت میں سماعت کے دوران نیب پراسکیوٹر نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ آف شور کمپنیوں کا ریکارڈ منگوانے کےلیے یو اے ای لیٹر لکھے ہیں۔ ریکارڈ آتے ہی ریفرنس دائر کر دیا جائے گا۔ جبکہ علیم خان کے وکیل کا کہنا تھا کہ پراسیکیوشن کے پاس ریفرنس پیش کرنے کیلئے ثبوت نہیں ہیں۔