مولانا خادم حسین رضوی کی ضمانت منظور

EjazNews

گزشتہ برس نومبر میں مولانا خادم حسین رضوی کو 3ایم پی او کے تحت گرفتار کیا گیا تھا جس کا باقاعدہ نوٹیفکیشن بھی جاری کیا گیاتھا ۔ ان پر الزام تھا کہ انہوں نے معاشرے میں انتشار پھیلایا اور لوگوں کو مشتعل کرتے ہوئے جلاﺅ گھیراﺅ کے علاوہ توڑ پھوڑ اور کار سرکار میں مداخلت کی تھی۔
لاہور ہائیکورٹ نے مولانا خادم حسین رضوی کی ضمانت منظور کرلی ہے، انہیں 5لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کروانے کا حکم دیا ہے ۔ جبکہ تحریک لبیک پاکستان کے رہنما پیر افضل قادری کی ضمانت بھی منظور کر لی ہے۔ پیر افضل قادری کو 15جولائی تک ضمانت پر رہا کیا گیا ہے۔
مولانا خادم حسین رضوی کو شہرت کی بلندیا ں اس وقت ملی تھیں جب نواز شریف دور حکومت میں انہوں نے اسلام آباد میں دھرنا دیا تھا۔ یہ دھرنا انہوں نے توہین رسالت کے قوانین کی شقوں میں چھیڑ چھاڑ پر دیا تھا ۔ ان کے اس دھرنے میں وہ کامیاب رہے اور اپنے مطالبات بھی منوائے تھے ۔
یاد رہے تحریک لبیک پاکستان کے قائد مولانا خادم حسین رضوی کو گزشتہ برس نومبر میں گرفتار کیا گیا تھا۔ تحریک لبیک کی جانب سے 25نومبر کو دی جانے والی احتجاجی کال سے امن وامان کی صورتحال خراب ہونے کے خدشے کے پیش نظر تحریک لبیک کے کارکنان کو گرفتار کرنا شروع کیا گیا تھا جس کے بعد تحریک لبیک کے قائدین کو بھی حراست میں لیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:  ملتان سلطانز نے چھٹے اوور میں میدان مار لیا