عمران خان

وزیراعظم عمران خان کا قومی اسمبلی میں خطاب

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسٹ پاکستان ہم سے اس لیے جدا ہوا کہ ہاں احساس محرومی تھاجو ان کا حق تھا وہ ان کو نہیں ملا۔ سارے پاکستان کو ان سے ایک سبق سیکھنا چاہیے کہ ہمارے کسی بھی علاقے کو یہ محسوس نہیں ہونا چاہیے کہ وہ پیچھے رہ گیا ہے۔ احساس محرومی کو پاکستان کے دشمن استعمال کر سکتے ہیں اور کر بھی رہے ہیں۔ ہمارے پاس دنیا بھر سے مثالیں موجود ہیں ۔ ایسٹ جرمنی پیچھے رہ گیا تھا ، ویسٹ جرمانی نے قربانی دی اور ان کو مدد کی اور پھر سارا جرمنی ترقی کر گیا۔ صوبے کے اندر کوئی علاقے ہوں یا کوئی صوبہ ہو یا کسی بھی سطح پرہواس کو یہ محسوس نہیں ہونا چاہیے کہ وہ پاکستان کا حصہ نہیں یا پاکستان کے لوگوں کو اس کی پرواہ نہیں ۔ قبائلی علاقوں کی قربانیوں کا ہمیں پورا احساس ہے اور پوری کوشش کریں گے کہ ان کو آگے بڑھائیں۔
جبکہ وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ فاٹا سے متعلق بل پر تمام جماعتوں نے اتفاق کیا ہے، اتفاق کرنے پر تمام جماعتوں کو مشکور ہوں۔
وزیراعظم کا کہنا تھا فیصلہ کیاتھا تمام صوبےاین ایف سی میں3 فیصد فاٹا کو دیں گے، فاٹا میں دہشت گردی کیخلاف جنگ کے باعث بہت نقصان ہوا، فاٹامیں ترقیاتی منصوبے کیلئے بڑی رقم کی ضرورت ہے۔عمران خان نے کہا خیبرپختونخوا کے ترقیاتی فنڈ سے فاٹاکے ترقیاتی منصوبے مکمل نہیں ہوسکتے، تمام صوبوں سے درخواست کی کہ فاٹا کیلئے ترقیاتی منصوبوں کی رقم میں حصہ ڈالیں۔

یہ بھی پڑھیں:  لاہور میں خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی وزیراعظم نے نوٹس لے لیا