imran-khan

وزیراعظم عمران خان کا راولپنڈی میں ہسپتال کی افتتاحی تقریب سے خطاب

EjazNews

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہماری سب سے زیادہ کوشش یہ ہوگی کہ ہم عوام کیلئے مزید سرکاری ہسپتالوں کو بہتر کریں ،جدھر ضرورت ہے اور ہسپتال بنائیں۔7لاکھ 20ہزار کی ہیلتھ انشورنس ہو اور کسی کے گھر میں کوئی بھی بیماری ہو تو وہ ہیلتھ کارڈ سے کہیں بھی اپنا علاج کروا سکے۔ ہم معاشرے میں نئی سوچ لا رہے ہیں۔ ہمارا احساس کا پروگرام ہے جس کا مطلب ہے حکومت نے عام لوگوں کی مدد کرنی ہے۔ پناہ گاہیں بن رہی ہیں بہت سے بن چکی ہیں۔ہماری حکومت کی کوشش ہے کہ عام آدمی سڑک پر نہ سوئے۔ سارا دن کام کر کے دیہاڑی لگا کے پیسے بچانے کیلئے کھانا نہ کھا کے سڑک پر لوگ نہ سوئیں بلکہ کھانا بھی کھائیں اور چھت کے نیچے سوئیں۔
ان کا کہنا تھا کہ ہماری حکومت گائوں میں غریب گھرانوں کو گائے بھینسیں ، بکریاں ، مرغیاں دیں گے تاکہ وہ اپنے پیروں پر کھڑے ہو سکیں۔ نوجوانو ں کیلئے سود سے پاک قرضے دیں گے۔ ہماری ہائوسنگ سکیم کے تحت ہم پورے پاکستان سے ڈیمانڈ مانگ رہے ہیں۔ ہر انسان چاہتا ہے اس کے سر پر چھت ہو، تنخواہ دار اور غریب طبقہ گھر بنا سکے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہمیں معلوم ہے مہنگائی ہے مشکل ہے۔ میں یہ بات سمجھانا چاہتاہوں کہ مہنگائی کیوں ہوتی ہے گیس کیوں مہنگی ہوئی ہے بجلی مہنگی کیوں ہوتی ہے۔ ہمارا پاور سیکٹر مقروض ہو جاتا ہے، جب ہماری حکومت آئی 13سو ارب کے قرضے چڑھے تھے آپ کے پاس دو طریقے ہیں یا تو اور قرضے چڑھائیں یا پھر قیمت بڑھائیں ۔ بدقسمتی سے پچھلا نظام ٹھیک نہ تھا۔ گیس جس پر کبھی قرضہ نہ چڑھا تھا اس پر ڈیڑھ سو ارب کا قرضہ چڑھ گیا۔ جب ہماری حکومت آئی اس سے پہلے ملک پر 30ہزار ارب کا قرضہ تھا ۔ ان قرضوں کو اتارنے کیلئے تھوڑی دیر قوم کو مشکل سے گزرنا پڑے گا۔ ایک گھر پر قرض تب چڑھتا ہے جب آمدنی کم ہوتی ہے اور اخراجات زیادہ ہوتے ہیں۔وہ قرض کو اتارنے کیلئے اپنی آمدنی بڑھاتے ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ میں اپنی قوم کو اس بات کا احساس دلانا چاہتا ہوں پاکستان ایک امیر ملک ہے جیسے جیسے نظام ٹھیک ہوتا جائے گا آپ دیکھیں گے کہ یہ ملک اللہ کی کتنی بڑی نعمت ہے۔ آپ دیکھیں گے انشاء اللہ یہ کتنا عظیم ملک ہے۔
راولپنڈی میں بننے والا ہسپتال 4سو بیڈ پر مشتمل ہے، پہلے مرحلے میں 2سو بیڈ تعمیر کیے جائیں گے ۔ 105کنال اراضی پر مشتمل ہسپتال ہوگا۔ 6ارب روپے سے یہ تعمیر ہوگا۔ گائنی کی تمام سہولیات ایک چھت تلے میسر ہوں گی۔ گائنی کے لحاظ سے کوئی سرکاری ہسپتال مجموعی طور پر راولپنڈی کیلئے میسر نہیں تھا۔ یہ مکمل طور پر گائنی کیلئے بنایا جانے والا اور پوری سہولیات کے ساتھ پہلا سرکاری ہسپتال ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں:  بلاول بھٹو زرداری کا دلچسپ انٹرویو