توہین رسالت میں رہائی پانے والی آسیہ بی بی کینیڈا منتقل

EjazNews

آسیہ بی بی کو توہین رسالت کے ارتکاب میں سزائے موت سنائی گئی تھی ۔جس کو عدالت نے ناکافی شواہد کی بناءپر رہا کر دیا تھا۔تاہم آسیہ بی بی کی رہائی کے بعد اسے کسی نامعلوم جگہ پر منتقل کر دیا گیا تھا ۔ کیونکہ پورے ملے میں اس کیخلاف احتجاجی مظاہرے ہوئے تھے کہ ایک توہین رسالت کی مرتکب کو عدالت کیسے رہا کر سکتی ہے تاہم عدالت کا کہنا تھا کہ عدالت ثبوتوں کی بنا پر چلتی ہے اور آسیہ بی بی کیخلاف شواہد ناکافی ہیں۔ان احتجاجی مظاہروں کے الزا م میں تحریک لبیک کے خادم حسین رضوی پابند سلاسل ہیں۔
غیر ملکی میڈیا نے آسیہ کے وکیل سیف الملوک کے حوالے سے خبریں نشر کی ہیں کہ وہ کینیڈا شفٹ ہو گئی ہے ۔ آسیہ کے بچے پہلے سے ہی کینیڈا میں موجود ہیں۔
تاہم ایسی خبریں اس سے پہلے بھی نشر ہوتی رہی ہیں کہ آسیہ کو کسی دوسرے ملک میں منتقل کر دیا گیا ہے لیکن حکومت نے اس کی تصدیق کبھی نہیں کی اور اس بارے میں بھی ابھی حکومتی موقف سامنے نہیں آیا کہ آسیہ کو باہر منتقل کر دیا گیا ہے یا نہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  بلاول بھٹو زرداری کی میڈیا سے گفتگو