رمضان میں مہنگائی کا بازار گرم ہو چکا

EjazNews

رمضان میں ہر سال کی طرح مہنگائی کا طوفان رمضان سے پہلے ہی نظر آنا شروع ہو چکا ہے ۔ رمضان کی آمد سے قبل بہت سے لوگوں نے عوام کی جیبیں خالی کرنے کا پورا پروگرام بنایا ہوا ہے اور یہی وہ لوگ ہیں جو ہر سال عوام کو اس مقدس مہینے میں پریشان کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑتے۔

منافع خورو ں سے عوا م کو بچانا حکومتی ذمہ داری ہے اور حکومت کو اپنی ذمہ داری کا احساس کرتے ہوئے پوری منافع خوروں کو قلع قمع کرنے کی ضرورت ہے ۔

دوسری طرف عوا م کو بھی ذمہ داری کا احساس کرتے ہوئے اس بات کا احساس کرنا چاہیے کہ اگر ایک قوم بن کر کسی چیز کا اگر بائیکاٹ کر دیا جائے تو کیا وہ مہنگی رہ سکتی ہیں۔ اس سلسلے میں بہت سے لوگوں نے عوامی مہم کا بھی آغاز کیا ہوا ہے اور عوامی رائے میں اس آگاہی کو اجاگر کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کب کون چیئرمین،ڈپٹی چیئرمین سینٹ رہا

کچھ اطلاعات ایسی بھی ہیں کہ وزیروں کو حکم جاری کر دیا گیا ہے کہ رمضان بازاروں کا دورۂ کریں اور ذمہ داران مانیٹرنگ کا سخت نظام بنائیں۔تاکہ مہگائی کے جن کو قابو میں رکھا جا سکے۔ ویسے تو یہ بیان ہر سال آتا ہے کوئی نئی بات نہیں۔ لیکن اس دفعہ ملک میں تبدیلی کے نام پر حکومت بنائی گئی ہے دیکھیں مہنگائی جیتتی ہے یا پھر تبدیلی۔