imran khan happing mod

وزیراعظم عمران خان کا 50لاکھ گھروں کا خواب اور غریب عوام

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے آج رینالہ خورد میں 50لاکھ گھروں سے جٰڑی ایک کڑی کا افتتاح کیا اس کے بعد انہوں نے لاہور ایچی سن کالج میں بھی خطاب کیا۔ وزیراعظم نے اپنے خطاب میں ریاست مدینہ کا بھی ذکر کیا اور موجودہ دور میں ریاست مدینہ کے قوانین پر عمل کرنے والے معاشروں کا بھی ذکر کیا۔

اب اپنے معاشرے کو ان معاشروں کے برابر لانا تو درکنار ہم ہر آنے والے وقت میں پہلے سے زیادہ برے حالات کی طرف ہی جاتے رہے ہیں۔ معاشرتی المیوں کی درد ناک داستان صرف گزشتہ حکومتوں میں ہی نہیں آج بھی ایسی داستانیں رقم ہو رہی ہیں جس سے پورا معاشرہ حل کر رہ جاتا ہے۔ ساہیوال میں جس طرح معصوم لوگوں کو قتل کیا گیا اگر جن معاشروں کی وزیراعظم بات کرتے ہیں ان میں ایسا ہوتا تو سوچئے مجرموں کو کیسے عبرت کا نشانہ بنایا جاتا۔اور ہمارا ہاں کیا ہوا کسی سے ڈھکاچھپا نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پشاور زلمی نے18 ویں اوور میں فتح حاصل کر لی

اس کے بعد نشوی کیس میں کیا ہوا۔ اگر ریاست مدینہ میں کسی معصوم بچی کے ساتھ ایسا سلوک کیا جاتا تو یہ جان لیجئے ایسے مجرموں کی سزا ایسی عبرت ناک ہونی تھی کہ آنے والے وقتوں میں وہ مثال بن جانی تھی۔

وزیراعظم 50لاکھ گھر بنانا چاہتے ہیں۔ان کی نیک نیتی پر کسی کو شک نہیں۔ بس ڈر اس بات کا ہے کہ یہ گھر مفاد پرست اور منافع خور نہ لے اڑیں۔ کیونکہ جن لوگوں کے لیے یہ گھر بنائے جارہے ہیں وہ کمزور بھی ہیں اور غریب بھی۔ اب حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے منصوبے کو مفاد پرستوں کی جنت نہ بننے دے۔ اور اس منصوبے کی حفاظت اسی طرح کریں جس طرح ریاست مدینہ میں غریبوں کے مفاد کا کیا جاتا تھا۔