appoziation

مسلم لیگ ن کے نئے اپوزیشن لیڈر و چیئرمین پی اے سی نامزد

EjazNews

اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی تقرری کے بعد سے ان پر انگلیاں اٹھائی جارہی تھیں۔ اپوزیشن میاں شہباز شریف پر سخت تنقید کے نشتر بھی برسا رہی تھی۔ مسلم لیگ ن کے میں ہونے والی یہ تبدیلی اپنی جگہ بہت معنی رکھتی ہے۔ کیونکہ مسلم لیگ ن جب سے بنی ہے یہ پہلی مرتبہ ہوا ہوگا کہ بحیثیت کارکن کسی کو ایسے عہد ے پر نامزد کیا گیا ہو اور پارٹی کی اعلیٰ ترین قیادت بیک ڈور پر چلی جائے ۔ آج ہونے والے اجلاس میں مسلم لیگ (ن) شہباز شریف کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی چیئرمین شپ سے دست بردار ہوگئی ہے اور ان کی جگہ رانا تنویر کو نیا چیئرمین پی اے سی نامزد کردیا گیا ہے جبکہ خواجہ آصف کو قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کا کردار نبھائیں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پارٹی کی اعلیٰ قیادت کی رضا مندی سے ہی رانا تنویر کو چیئرمین پی اے سی کے لیے اورخواجہ آصف کو پارلیمانی لیڈر نامزد کیا گیا جس کی تمام مسلم لیگی ارکان نے تائید کی۔
ذرائع کے مطابق مسلم لیگ (ن) شہباز شریف کی جگہ شاہد خاقان عباسی کو قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف نامزد کرنے پر مشاورت کی جارہی ہے جس کا حتمی فیصلہ شہباز شریف کی وطن واپسی کے بعد ہوگا۔تاہم اپوزیشن لیڈر کی تبدیلی کی حتمی منظوری پارٹی کے تاحیات قائد نواز شریف دیں گے۔
یاد رہے شہباز شریف خرابی صحت کے باعث اپوزیشن لیڈر کا فعال کردار ادا نہیں کرسکتے اور وہ طویل عرصے بعد طبی معائنے کے لیے لندن پہنچے ہیں جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مکمل علاج تک لندن میں ہی قیام کا مشورہ دیا ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف ہیں جن کے پاس پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی چیئرمین شپ کے علاوہ قومی اسمبلی میں اپنی جماعت کا پارلیمانی لیڈر کا عہدہ بھی ہے۔
اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف کو نیب نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ میں ان کا نام ای سی ایل پر ڈالا گیا جسے بعدازاں لاہور ہائیکورٹ کے حکم پر ای سی ایل سے نکال دیا گیا تھا۔
آج مسلم لیگ (ن) کے رہنما راجہ ظفرالحق اور خواجہ آصف کی زیرصدارت پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا جس میں شاہد خاقان عباسی، رانا تنویر، خرم دستگیر، مشاہد حسین اور دیگر نے شرکت کی۔شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ خواجہ آصف متحرک اور سینیئر پارلیمنٹیرین ہیں جنہیں شہباز شریف کی خواہش پر قومی اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر بنایا جا رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بال ٹمپرنگ کا فائدہ کیا ہے، آخر ایک سائیڈ سے بال کو مزید گندہ کرنے سے کیا فرق پڑتاہے