سلامتی کونسل نے مسعود اظہر کو دہشتگرد قرار دے دیا

EjazNews

مسعود اظہر پر عالمی پابندی کے بعد مسعود اظہر کے اثاثے منجمد کیے جانے کے ساتھ ساتھ ان پر سفر کرنے اور ہتھیار رکھنے پر بھی پابندی ہوگی۔ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے کالعدم جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر پر سلامتی کونسل کی جانب سے عائد پابندی کی تصدیق کی ہے۔ان کا کہنا ہے کہ اقوام متحدہ کی 1267 پابندی کمیٹی نے مولانا مسعود اظہر کو پاکستان اور چین کی جانب سے اعتراض ختم کیے جانے کے بعد پابندیوں کی فہرست میں شامل کیا۔ دونوں ممالک کو مولانا مسعود اظہر کو مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کے ساتھ جوڑنے پر اعتراض تھا جسے تسلیم کیا گیا اور مسعود اظہر پر عالمی پابندیاں صرف جیش محمد سے تعلق کی بنیاد پر لگائی گئی ہیں۔
ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ کمیٹی کے تمام تکنیکی معاملات کا احترام کیا ہے، پاکستان نے کمیٹی کے سیاسی استعمال کی مخالفت کی ہے، پاکستان نے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کو دہشتگردی سے جوڑنے کی بھارتی کوشش کی مخالفت کی۔ پاکستان اس سے قبل چین کے تعاون سے چار مرتبہ بھارتی کوششیں ناکام کر چکا ہے، کشمیر کی جدوجہد آزادی سے مولانا مسعود اظہر کا تعلق ختم کرانا پاکستان کی کامیابی اور بھارتی کی ناکامی ہے۔
یاد رہے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مسعود اظہر پر پابندی کی قرارداد 27 فروری کو فرانس، برطانیہ اور امریکا نے پیش کی تھی لیکن چین نے مسعود اظہر سے متعلق سلامتی کونسل کی قرارداد پر تکنیکی اعتراض اٹھایا تھا۔تاہم اب چینی تکینکی اعتراض ختم کیے جانے کے بعد سلامتی کونسل کی پابندی کمیٹی نے مولانا مسعود اظہر پر پابندی عائد کردی ہے اور ان کا نام عالمی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کرلیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کیپٹن (ر) محمدصفدر کو مزار اقبال کا تقدس پامال کرنے پر گرفتار کر لیا گیا