sports raond up

سپورٹس راﺅنڈ اپ

EjazNews

ملائیشیا چیمپیئن شپ میں کراٹے چیمپیئن محمد اویس نے کانسی کا تمغہ جیت لیا
ملائیشیا میں 18ویں ایشین کیڈٹ جونیئر کراٹے چیمپئن شپ میں پاکستان کے محمد اویس نے کانسی کا تمغہ جیت لیا،محمد اویس نے انڈر21 کی 75 کلوگرام کٹیگری میں کانسی کا تمغہ حاصل کیا۔تمغہ جیتنے پر پاکستان کراٹے فیڈریشن نے محمد اویس کو مبارکباد،محمد اویس کا یہ بھی اعزاز ہے کہ اس چیمپیئن شپ میں وہ بغیر کوچ کے شریک ہوئے۔

مختلف تمغے جیتنے والے ملائیشن آرگنائزرز کے ساتھ

یہ ہماری بد قسمتی ہے کہ پاکستان میں صرف ایک کھیل کرکٹ ہے جس کو ہر طرح کی سپانسر شپ بھی ملتی ہے اور حکومتی توجہ بھی حاصل ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ اگر باقی تمام کھیلوں کی جانب دیکھیں تو جن لوگوں نے بھی اپنا نام بنایا ہے یا کسی مقام پر پہنچے یا وہ عراق میں کھیلنے والے فٹ بالر ہوں یا پھر سکوائش کی دنیا میں نام پیدا کرنے والے ہوں سب نے اپنے بل بوتے پر ہی کچھ حاصل کیا ہے۔ حکومت کی نظر کرم صرف کرکٹ پر ہونا اور باقی کھیلوں کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کرنا کچھ مناسب نہیں ہے۔ حکومت کو تمام کھیلوں کی جانب توجہ دینی چاہیے تاکہ پاکستان کے ہونہار ہر میدان میں اپنا لوہا منوا سکیں اور آپ صرف ان پر توجہ دیجئے ان کی ضرورتیں پوری کیجئے وہ آپ کو شاندار نتائج لا کر دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  دنیا نے آر ایس ایس کے غنڈوں کے ہتھکنڈوں، نفرت اور نسل کشی کے نظریات کو نہ روکا تو یہ مزید بڑھ جائیں گے:وزیراعظم عمران خان
پاکستانی خواتین کرکٹ ٹیم کی خوشگوار لمحات کی تصویر

خواتین کرکٹ ٹیم ساﺅتھ افریقہ کیلئے روانہ
پاکستان کی خواتین کرکٹ ٹیم ساﺅتھ افریقہ کیلئے روانہ ہو گئی ہے۔جہاں وہ 6مئی سے 23مئی تک ہونے والی سیریز کھیلیں گی۔ سیریز میں 3ون ڈے اور 5ٹی ٹونٹی میچ کھیلیں جائیں گے۔
خواتین کرکٹ ٹیم کی کپتان بسمہ نے گزشتہ روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان کی ٹیم متوازن ہے اور سیریز میں زیادہ سے زیادہ آئی سی سی چیمپیئن شپ پوائنٹ حاصل کرنے کی کوشش کریں گی۔انہوں نے کہا کہ جنوبی افریقہ سے ایک پوائنٹس کا فرق ہے، جیت کر رینکنگ بہتر کرنے کی کوشش کریں گے، میزبان ٹیم کا پیس اٹیک تگڑا ہے، جس کو بہتر انداز سے کھیلنا ہوگا۔
یاد رہے کہ پی سی بی نے خواتین کرکٹرز کے لیے برطانوی نژاد پاکستانی ٹرینر کی تقرری کی ہوئی ہے۔

ایک سیلفی تو بنتی تھی۔ خواتین کرکٹ ٹیم کی روانگی سے قبل لی گئی سیلفی

ڈپارٹمنٹل سپورٹس ختم کرنے کی مخالفت میں آوازیں اٹھنے لگیں
کراچی پریس کلب میں قومی ہیروز جہانگیر خان، سید صلاح الدین اور جاوید میاندادکا کہنا تھا موجود ہ حالات میں کھلاڑیوں کا سب سے بڑا مسئلہ معاشی ہے اور میں یقین سے کہتا ہوں کہ اگر پی آئی اے نہ ہوتا تو آج جہانگیر خان ، جہانگیر خان نہ ہوتے۔ان کا کہنا تھا نوکری سب کی ضرورت ہوتی ہے ۔جاوید میاندار نے وزیراعظم کو پرانے وقتوں کی یاد دلاتے ہوئے سوال کیا کہ کیا وزیراعظم نے خود کاﺅنٹی کرکٹ نہیں کھیلی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ڈپارٹمنٹل سپورٹس ختم کرنے سے کھلاڑیوں کے معاشی مسائل میں اضافہ ہو جائے گا۔ پورے ملک میں معاشی حالات خراب ہیں، ان کا کہنا تھا کہ کھلاڑیوں کے لیے پہلے متبادل انتظام کرلیں کوئی سسٹم بنا لیں اس کے بعد ڈپارٹمنٹل کرکٹ ختم کر دیں ۔پریس کانفرنس میں ان کا کہنا تھا کہ ہر بڑا ادارہ کم از کم 20سے لے کر 25کھلاڑیوں کو لازمی ملازمت مہیا کر تا ہے۔
اس موقع پر جہانگیر خان نے کہا کہ میں جو آج یہاں پریس کلب میں بیٹھا ہوں اس کی وجہ ڈپارٹمنٹل کرکٹ ہی ہے۔ اب وہاں بھی کنٹریکٹ سسٹم شروع ہو چکا اور اس کے بعد ختم ہی کیا جانا نا انصافی ہے۔ جب معاشی معاملات خراب ہوں گے تو کیسے اچھی کھیل پیش کی جاسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  جب مقبوضہ کشمیر کی بات آتی ہے ہم ایک ہیں: میاں شہباز شریف
سابق عالمی چیمپیئن ڈیپارٹمنٹل کرکٹ کے خاتمے کیخلاف پریس کانفرنس کرتے ہوئے