چین کی مدد سے سائنس و ٹیکنالوجی کی یونیورسٹی قائم کرنا چاہتے ہیں: وزیراعظم

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے بیجنگ میں سرمایہ کاری فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئی ٹی، مصنوعی ذہانت ، سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں بھی چین سے تعاون چاہتے ہیں،ہم چین کی مدد سے سائنس اور ٹیکنالوجی کی یونیورسٹی قائم کرنا چاہتے ہیں، پاکستان سی پیک پر چین کا شکر گزار ہے، چاہتے ہیں چینی اپنی صنعتیں پاکستان میں لگائیں، پاکستان چین کے سرمایہ کاروں کو درپیش رکاوٹیں دور کرے گا، پاکستان غیرملکی سرمایہ کاروں کے لیے محفوظ ملک ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کے پڑوس میں دنیا کی بڑی مارکیٹیں ہیں، جتنی تجارت اور رابطے ہوں گے ممالک کے درمیان تعلقات بڑھیں گے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ تمام ملکوں میں ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق تشویش پائی جاتی ہے، موزمبیق اور فلپائن میں ماحولیاتی تبدیلی سے بڑی تبدیلی آئی، خوشی ہے کہ پاکستان نے اس سے نمٹنے کے لیے بڑی جدوجہد کی، 5 برسوں کے دوران پاکستان میں 10 ارب پودے لگائے جائیں گے۔
وزیراعظم نے کہا کہ افغانستان میں امن سے وسط ایشائی ملکوں میں رابطے بڑھیں گے، 4 دہائیوں کی جنگ کے بعد افغانستان کو امن کی ضرورت ہے، وسط ایشیائی ممالک نے بھی افغانستان میں امن پر بات کی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ امید کرتے ہیں بھارت میں الیکشن جلد مکمل ہوجائیں گے اور نئی بھارتی حکومت پاکستان سے اچھے تعلقات استوار کرے گی اور مسئلہ کشمیر کا حل مذاکرات سے نکل سکتا ہے۔
یادرہے پاکستان اور چین کے درمیان ایک معاہدے کے تحت پشاور سے کراچی ایک نیا ٹریک بنے گا ،نئے ٹریک پر ٹرین کی اسپیڈ کم از کم 160 کلو میٹر فی گھنٹہ ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:  ہمیں سکیورٹی خطرات کا سامنا ہے،بہت زیادہ دہشت گردانہ سرگرمیاں ہورہی ہیں:ترجمان پاک فوج