ون بیلٹ ون روڈ۔کیا دنیا واقعی ہی بدل جائے گی

EjazNews

جب چائنہ نے یہ منصوبہ دنیا کے سامنے پیش کیا تو بڑے بڑے مالیاتی اداروں اور ملکوں کا خیال یہی تھا کہ دیوانے کا خواب ہے لیکن جوں جوں اس منصوبے نے عملی جامعہ پہننا شروع کیا تو اس کی افادیت سامنے آنے لگ پڑی اور دنیا حیران رہ گئی کہ اس ناممکن کو چائنہ نے ممکن کیسے بنا لیا۔ کہتے ہیں آپ ارادہ پختہ کر لو اور نیت سے کام کرو تو۔منزل مل ہی جاتی ہے۔

چائنہ میں دوسرے ون بیلٹ ون روڈ کے سلسلے میں دنیا بھر سے اہم شخصیات اور مالیاتی ادارے۔ میڈیا چائنہ میں جمع ہے اور اپنے اپنے خیالات کا اظہار کر رہے ہیں۔اسی سلسلے میں دور کی سوچ رکھنے والے چائنہ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ تمام دنیا کو اپنی سرحدیں کھولنا ہوں گی اور اقوام متحدہ کے 2030ء کے ایجنڈے پر عملدرآمد کرنا ہو گا۔

یہ بھی پڑھیں:  جمال خاشقجی کے متعلق جاری امریکی رپورٹ کو سعودی عرب نے سختی سے مسترد کر دیا