’’احساس‘‘پروگرام کے تحت کسانوں کو بلا سود قرضے ملیں

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے غربت میں کمی کیلئے ’’احساس ‘‘کے نام سے ایک پروگرام پورے پاکستان میں شروع کیاگیا۔ اس پروگرام کے تحت عوامی فلاح و بہبود کیلئے خطیر رقم مختص کی گئی ہے اور اس بات کو ممکن بنانا کہ یہ پیسے عوام پر ہی خرچ ہو حکومت کا کام ہے۔حکومت کا اس سلسلے میں اقدام یہ ہے کہ وہ تھرڈ پارٹی آڈٹ کرائے گی۔ اس پروگرام کے تحت ایک نئی وزارت قائم ہوئی ہے جو اس پورے منصوبے کو چلائے گی تاکہ ملک میں غربت کے خاتمے کا ایک مربوط نظام قائم ہو سکے۔

اسی سلسلے میں گزشتہ روز ایک پالیسی کا اعلان کیا گیا ہے جس کے تحت چھوٹے کسانوں کو حکومت بغیر سود کے قرضے مہیا کرے گی۔ زراعت ہماری معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے اور آپ یہ جان کر حیران رہ جائیں گے کہ زراعت پر قرضوں کی شرح سود سب سے زیادہ ہے ۔
ویسے بھی چھوٹے کسانوں کے پاس بہت زیادہ پیسے نہیں ہوتے اور اگر کوئی قرض میں پھنس جائے تو اللہ اس پر رحم کرے ۔ اور جو قرض میں ایک دفعہ پھنس جاتا ہے وہ کبھی اپنی آمدن بڑھانے میں کامیاب بھی نہیں ہوتا۔ اسی سلسلے کو دیکھتے ہوئے احساس پروگرا م کے تحت حکومت پاکستان نے کسانوں کو بلا سود قرضوں کی فراہمی کا اعلان کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ہم جمہوری لوگ ہیں، مذاکرات پر یقین رکھتے ہیں:وزیر داخلہ

لیکن یہ وضاحت کہیں پر نہیں ہے کہ چھوٹےکسان کن کو مانا جائے گا اور چھوٹے کسان جن کے پاس تعلیم کی بھی کمی ہوتی ہے قرضے ان تک پہنچیں گے کیسے ۔
یاد ر ہے ایسے بہت سے اقدامات پہلے بھی حکومتوں نے کیے لیکن ان کے خاطر خواہ نتائج اس لیے برآمد نہ ہو سکے کہ جن کا حق ہو تا ہے ان تک پہنچ ہی نہیں پاتا یاپھر آٹے میں نمک جیسی مثال پوری اترتی ہے۔ حکومت کو اس بات کو بھی یقینی بنانا ہو گا کہ پیسے اصل مستحقین کے پا س پہنچیں اور وہ ان پیسے سے فوائد حاصل کر سکیں۔