cat

بلیاں اونچائی سے گرنے کے باوجود محفوظ کیسے رہتی ہیں؟

EjazNews

آج ہم بلی کی اسی قدرتی صلاحیت کے بارے میں آپ کو بتائیں گے جو کئی مواقعوں پر اس کی جان بچاتی ہے۔شرارتیں اور بھاگ دوڑ کرتے ہوئے معصوم بلیوں کا گرنا روز مرہ کا معمول ہے ہر بار گرتے ہوئے وہ اپنی ٹانگوں کا رخ زمین کی طرف کرلیتی ہے یعنی گرنے کے بعد پہلے اس کے پائوں زمین سے ٹکراتے یں بہت کم کہیں سے گرنے کے بعد کسی بلی کی موت واقع ہوتی ہے۔
اگر وہ کسی جگہ سے الٹی یعنی پشت کے بل گرے تب بھی زمین پر وہ سیدھی یعنی ٹانگوں کے بل پر ہی پہنچتی ہے۔ بلیوں میں یہ صلاحیت ہوتی ہے کہ وہ گرنے کے دوران ہوا میں ہی اپنے جسم کا رخ بدل کر ٹانگو کا رخ زمین کی طرف کرلیتی ہیں۔ لیکن ٹانگوں کے بل زمین پر گرنا ہر دفعہ کار آمد نہیں ہوتاخصوصاً اس وقت جب بلی بہت زیادہ بلندی سے نیچے گرے۔ اس بارے میں جاننے کیلئے ماہرین نے 100ایسی بلیوں کے گرنے کا جائزہ لیا جو 2سے لے کر 32منزلوں تک ہر قسم کی اونچائی سے گر چکی تھیں۔ ماہرین نے ایک انوکھی تکنیک دریافت کی ۔ انہوں نے دیکھا کہ اگر بلی 7منزلوں تک کی اونچائی سے گرے تب تو وہ ٹانگوں کے بل ہی گرتی ہے لیکن اگر وہ اس سے زیاد بلندی سے گر پڑے تو وہ اپنی ٹانگوں کو پھیلا لیتی ہے اور پیٹ کے بل زمین پر گرتی ہے۔پیٹ کے بل گرنے سے پسلی کی ہڈی ٹوٹنے یا پھیپھڑوں کو نقصان پہنچنے کا خطرہ ہوتا ہے تاہم ٹانگ ٹوٹنے سے محفوظ رہتی ہے۔ اور معصوم بلی کی جان بھی بچ جاتی ہے۔
لیکن خیال رہے کہ اگر آپ اس مضمون کو پڑھ کر اپنی پالتو بلی کو اونچائی سے گرانے کا تجربہ کرنا چاہتے ہیں تو یہ نہایت بے رحمانہ خیال ہے، پالتو بلیاں دیگر بلیوں کی نسبت ذرا زیادہ نازک مزاج ہوتی ہیں اور ہو سکتا ہے آپ کا کھیل کھیل میں کیے جانے والا تجربہ آپ کے پالتو جانور کو بہت زیادہ نقصان پہنچا دے۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستانی بچےزیدان حامد کا عالمی ریکارڈ