Chair man naib

بدعنوان تمام برائیوں کی جڑ ہیں :چیئرمین نیب

EjazNews

چیئرمین نیب نے لاہور میں نیب افسران سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیب احتساب کا عمل جاری رکھے گا اور جو کوئی بھی کرپشن میں ملوث پایا جائے گا اس کو کوئی رعایت نہیں دی جائے گا۔ افسران سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بیوروکریسی ملک میں ریڑھ کی ہڈی ہوتی ہے۔ انہیں بلا خوف و خطر کام کا ماحول میسر کرنا ہوگا۔ کیونکہ حکومت پالیسیاں بناتی ہے لیکن ان پالیسیوں پر عملددرآمد بیوروکریسی کراتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ملک کی بیوروکریسی نے نیب کے خوف کی وجہ سے کام چھوڑ دیا ہے۔ اگر بیوروکریسی کے مقدمات کی جانب دیکھا جائے تو وہ نہ ہونے کے برابر ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اگر بیوروکریسی قانون کے مطابق کام کرے گی تو نیب کیوں بلائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ گریڈ 19یا اس سے اوپر کے افسر کو ریجنل آفسز از خود گرفتار نہ کریں بلکہ چیئرمین نیب سے پیشگی اجازت لی جائے اور ایس گرفتار کسی افسر کو ہتھکڑی بھی نہ لگائی جائے ۔انہوں نے کہا نیب نے جن بیوروکریٹس کیخلاف کارروائی کی ان کیخلاف نیب کے پاس ٹھواس شواہد موجود ہیں ۔
چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ نیب نے بدعنوان عناصر سے 330ارب روپے حاصل کر کے قومی خزانے میں جمع کرائے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہم جن عہدوں پر فائز ہیں وہ پاکستان کی وجہ سے ہیں ۔میگا کرپشن کے مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانا سب کی اولین ترجیح ہے ۔بد عنوان تمام برائیوں کی جڑ ہیں اور نیب افسران قومی فریضہ سمجھ کر فرائض سرانجام دیں۔ان کا کہنا تھا کہ جائز معاملات میں افسران کے ساتھ مکمل تعاون کیا جائے لیکن جس کسی نے کرپشن کی اسے کسی صورت میں رعایت نہیں ملے گی۔
یاد رہے گزشتہ روز چیئرمین نیب نے شریف فیملی کی خواتین کو بھیجے گئے نوٹسز کو منسوخ کر دیا تھا ۔ ان کا کہنا تھا کہ نیب چادر اور چار دیواری کے تقدس کا احترام کرتی ہے۔ جن خواتین کو نوٹسز بھیجے گئے تھے نوٹسز کینسل کر کے ان کو سوالنامے بھیجے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  ناردرن نے ایم سی سی کو 9رنز سے شکست دے دی