head pain

سردرد کی وجوہات

EjazNews

زندگی میں ایک بار ہم سب سر درد میں ضرور مبتلا ہوتے ہیں۔ جن میں سے اکثر درد بے ضرر اور وقتی ہوتے ہیں اور عام طور پر ان کا سبب چھوٹی موٹی پریشانیاں ہوتی ہیں تاہم ان کے دیگر اسباب بھی ہیں اس لئے انتہائی ضروری ہے کہ اگر آپ اکثر و بیشتر سر درد کی تکلیف میں مبتلا رہتے ہیں تو اس کی صحیح تشخیص کرائی جائے تاکہ درد کی نوعیت کے مطابق اس کا مناسب اور بروقت علاج ممکن ہو سکے۔
ایک تحقیق کے مطابق برطانیہ میں ہر 20میں سے 1برطانوی سر درد میں مبتلا ہے۔ اور چار میں سے ایک کو کم از کم ایک رات سردرد کی شدید تکلیف سے دو چار ہونا پڑتا ہے ہمارے یہاں بھی صورتحال کچھ مختلف نہیں شاید ہی کوئی مرد یا خاتون ہو جو سردردکے تجربے سے نہ گزرا ہو۔
عام طور پر سردرد کی وجہ کوئی نہ کوئی انتہائی گھمبیر بات رقار دی جاتی ہے مگر سر درد کی اصل وجہ جدید دور کی پریشانیاں اور دبائو ہے۔ یوں کہہ سکتے ہیں کہ جدید دور نے سہولتوں کے ساتھ ساتھ انسان کیلئے پریشانی اور ڈپریشن کے سامان بھی پیدا کر دئیے ہیں۔
درد کی کئی اقسام ہیں
سردرد کی مختلف اقسام ہیں، جن کی درست تشخیص ہی انہیں نکال باہر کرنے میں معاون ثابت ہوتی ہے ور ہم اس کا بہتر اندا ز میں علاج کر سکتے ہیں۔ماہرین کئی اقسا م کے سردرد کی نشاندہی کرتے ہیں جن میں ٹینشن ، ری کرنگ (آدھے سر کا درد، کلسٹر)انفیکیشن ، برین ٹیومر اور سائٹو سائی نس جیسے خطرناک سردرد شامل ہیں۔ ڈاکٹر ای اسپیئرنگز کا کہنا ہے ’’ درد سر کے 10مریضوں میں سے9مریضوں کے درد کا باعث پریشانیاں ہوتی ہیں اور یہ سر درد عام طور پر کئی دنوں تک رہتا ہے جو پٹھوں کے کھچائو اور دبائو کے باعث ہوتا ہے۔ یہ درد پورے دماغ تک پھیل سکتا ہے یا پھر ایک جگہ تک محدود رہتا ہے۔ پریشانی کے باعث ہونے والا یہ سر درد تھکن، قبل ا ز حیض کی صورتحال ، حد سے زائد دھوپ میں رہنا ایک ہی سمت میں گھنٹوں کام کرتے رہنے کے باعث بھی ہو سکتا ہے۔ ا قسم کے درد کو ختم کرنے کیلئے درد سے نجات دلانے والی ادویات ہر وقت کارآمد ثابت نہیں ہوتیں بلکہ آرام اور گھرس باہر چہل قدمی سے آپ اس درد سے نجات پا سکتے ہیں۔
آدھے سر کا درد
آدھے سر کے درد کی عام طور پر دو بڑی اقسام تسلیم کی جاتی ہیں۔ ایک کا نام کامن اور دوسرے کا نام کلاسک رکھا گیا ہے۔ کامن سر درد کی علامت میں نبض کی غیر معمولی دھڑکن ، معدے کی خرابی ، متلی، شور اور روشنی سے حساسیت شامل ہیں جبکہ کلاسک (میگرین )آدھے سر کے درد م یں مریض کو پر اسرار قسم کی روشنیاں نظر آتی ہیں اور وہ دماغی مریض بن جاتا ہے اس میں مریض کو تیز روشنی کے جھما کے اور عجیب و غریب شکلیں نظر آتی ہیں ۔ مریضوں کی یہ کیفیت دو گھنٹے سے تین دن تک بھی ر ہ سکتی ہے۔ ایسے میں روشنی اور شور اس کے لئے ناقابل برداشت ہوتا جس کی وجہ سے دماغ کو خون فراہم کرن ے والی شریانیں اکڑائو اور اینٹھن کا شکار ہوجاتی ہیں۔ جس کے باعث سر درد شروع ہو جاتا ہے۔
حد سے زیادہ کا م اور تھکن بھی آدھے سر درد کا باعث ہو سکتی ہے ۔ اس کے علاوہ حد سے زیادہ شور مختلف اقسام کی تیز خوشبوئیں اور چند غذائوں جیسے خالص پنیر، اسپائسی فوڈز اور چاکلیٹ جیسی اشیاء کا بکثرت استعمال بھی اس درد کا باعث بن سکتا ہے۔
کلسٹر نامی سردرد کے اثرات چہرے کے ایک طرف اور آنکھ کے مرکز میں پڑتے ہیں اور چاقو کی طرح دماغ کو پھاڑنے والا درد 15منٹ اور تین گھنٹوں تک جاری رہ سکتا ہے مگر اس درد کی مدت 6سے12ہفتے تک بھی ہوسکتی ہے۔یہ سردرد زیادہ تر مردوں کو ہوتا ہے ، بالخصوص ان کو جو حد سے زائد نشہ اور تمباکو نوشی کرتے ہیں مگر اس کی حتمی وجہ ابھی تک معلوم نہیں ہو سکی۔
انفیکشن سردرد سے چہرے پر سوجن ہو جاتی ہے یا کبھی کبھی دماغ کی رگیں بھی پھٹ جاتی ہیں اور اس کا سبب انتہائی قسم کی الجھن ہو سکتی ہے۔ اگر یہ درد الرجی کے باعث ہو تو اینٹی ہسٹا مین ادویات اس سے نجات دلا سکتی ہیں تاہم اگر سر درد بیکٹیریا کے انفیکیشن کی وجہ سے ہو تو اینٹی بائیو ٹک ادویات ضروری ہو سکتی ہیں یا پھر اروماتھراپی یا ایکوپنکچر سے علاج بھی سود مند ثابت ہو سکتا ہے۔
بعض اوقات سر درد کسی بڑے خطرے کی علامت ہوتا ہے
تاہم زیادہ سر درد اس لحاظ سے مہربان ہو سکتے ہیں کہ یہ آنے والی کسی بڑی بیماری کی نشاندہی کا باعث بن سکتے ہیں اور ہمیں پتہ چل جاتا ہے کہ کوئی سنجیدہ مسئلہ پیش آنے والا ہے ۔ جس طرح آنکھوں کے اندر جالا آنے سے معلوم ہو جاتا ہے کہ آنکھ کی بڑی خرابی کا شکار ہونے والی ہے اسی طرح سر درد بھی کسی بڑی بیماری کی نشاندہی کر سکتا ہے۔
اگر آپ کے بچے کو سردرد کی ایسی تکلیف ہو جس کے بارے میں آپ تشریح نہ کر پاتی ہوں اور اسے متلی اور غش آتا ہو اور وہ کمزوری محسوس کرتا ہو تو فوراً ڈاکٹر سے رجوع کریں کیونکہ آدھے سر درد کی یہ ابتدائی علامات کسی دوسری بیماری کی علامت بھی ہو سکتی ہیں۔
بہت سے ٹینشن یا کلسٹر سردرد سے نجات کے لئے عام طور پر اسپرین یا پیرا سٹا مول لی جاتی ہے تاہم آپ کو ادویات کا سہارا لینے کی بجائے آرام حاصل کرنے کے لئے دیگر تکنیکو ں کو استعمال میں لانا چاہئے۔ اس ضمن میں یوگا کی ورزشیں آپ کے لئے مفید ثابت ہو سکتی ہیں۔
ادویات کے بغیر علاج
کلسٹر سر درد یا آدھے سر درد میں مبتلا لوگوں کے لئے آکسیجن کی فراہمی بھی بہت مفید ہے اگرڈاکٹر آپ کو خالص آکسیجن مہیا نہیں کر سکتا تو پھر آپ کے لئے تازہ ہوا میں چہل قدمی کرنا مناسب رہے گا ارو یہی آسان اور قدرتی نسخہ ہے کہ آپ صبح سویرے یا رات کو اپنے گھر کے صحن میں فلیٹ کی چھت پر یا پھر اپنے کسی قریبی پارک میں چہل قدمی کریں اور خوب گہرے سانس لے کر آکسیجن کی وافر مقدار حاصل کریں اس میں آپ کو آکسیجن ماسک کے خرچے سے بھی نجات ملے گی اور سارا دن آپ کو سردرد کی شکایت بھی نہیں ہوگی۔ آپ یہ چہل قدمی صرف 30منٹ تک ہفتے میں 3بار کریں گےتو پھر سردرد سے نجات مل جائے گی اور یہ طریقہ علاج کسی بھی کڑوی کسیلی دوا سے کئی گنا بہتر ہے اور اس سے آپ کی عمومی صحت پر بھی دیرپا اثرات مرتب ہوں گے۔ اگر آپ کو درد سر کی شکایت ہے تو کھانے کا ایک ٹائم ٹیبل مقرر کیجئے اور اس میں ناغہ آنے نہ دیں۔ کیونکہ بھوکا رہنے سے بھی سردرد کی شکایت ہو سکتی ہے۔ اور آپ کے پٹھے بھوک کے باعث سخت ہو سکتے ہیں اور اگر مردوں کو سردرد کی شدید شکایت رہتی ہے۔ تو انہیں حتیٰ الوسع تمباکو نوشی اور الکحل سے پرہیز کرنا پڑے گا۔ یہ بات بھی ذہن میں رکھئے کہ کچھ غذائوں سے الرجی کے باعث بھی سر درد ہو سکتا ہے۔ جیسے محفوظ کیا ہوا گوشت، اچار، چاکلیٹ، کھٹے پھل اور پنیر وغیرہ کو حد سے زیادہ کھانے سے پرہیز کرنا چاہیے۔ اگر ان غذائوں سے آپ کو سردرد کی شکایت رہتی ہے تو آہستہ آہستہ ان سے چھٹکارہ حاصل کرنے کی کوشش کیجئے پھر آپ اپنے آپ کو بہتر محسوس کریں گے۔
آخر میں ایک بات اور بتاتے چلیں کہ موسم کی تبدیلی میں بھی آپ درد شقیقہ یا آدھے سردرد میں مبتلا ہو سکتے ہیں ۔

یہ بھی پڑھیں:  خوش باش، متحرک رہ کر کرونا وائرس سے محفوظ رہیں
کیٹاگری میں : صحت