hamza

حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت منظور

EjazNews

لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس ملک شہزاد احمد کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے حمزہ شہباز شریف کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست پر سماعت کی۔عدالت نے 17اپریل تک ضمانت میں توسیع کر دی۔

جسٹس ملک شہزاد احمد خان کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی ۔
عدالت نے نیب سے پوچھا کہ بتائے کس کس کیس میںحمزہ کوگرفتار کرنا ہے۔ جس پر پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ حمزہ شہباز کیخلاف تین کیسز نیب میں زیر تفتیش ہیں۔گرفتاری آمدن سے زائد اثاثوں میں چاہتے ہیں۔ جس کیلئے ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے ہیں۔ دوسرے دو کیسز صاف پانی اور شوگر مل کے ہیں۔جس پر حمزہ شہباز کے وکیل کا کہنا تھا کہ نیب ہمار خلاف شواہد دے ہم جواب دیں گے۔ ان کے موکل بے گناہ ہیں۔ پراسیکیوٹر کا کہنا تھا حمزہ شہباز کے خلاف اربوں روپے کی ٹرانزیکشنز کے ثبوت ملے ہیں اور ان کے پاس نیب کے ثبوت کا کوئی جواب نہیں ہے۔
عدالت نے فریقین کے وکلاءکے دلائل سننے کے بعد تا حکم ثانی نیب کو حمزہ شہباز کی گرفتاری سے روکتے ہوئے ایک کروڑ روپے کے ضمانتی مچلکوں کے عوض عبوری ضمانت منظور کر لی۔

یہ بھی پڑھیں:  اپوزیشن جماعتوں نے بھارت کو ناراض نہ کرنے کیلئے گلگت بلتستان کو اس کے حقوق نہیں دئیے:وزیر برائے امور کشمیر

حمزہ شہباز کی حفاظتی ضمانت کی درخواست کی سماعت آج لاہور ہائی کورٹ میں ہوگی ،گزشتہ دو روز میں نیب نے کوشش کی کہ حمزہ شہباز کو گرفتار کرلیں لیکن انہوںنے گرفتاری نہ دی۔ لاہور میں واقع ان کے گھر کے باہر کارکنوں کی بھی ایک بڑی تعداد جمع ہو گئی جس کی حکام کے تکرار بھی ہوتی رہی۔
آج ہونے والی سماعت کے پیش نظر نیب نے بھی حکمت عملی تیار کر لی، 2رکنی ٹیم لاہور پہنچ چکی ہے، جوضمانت منسوخ ہونے پرحمزہ شہباز کو گرفتار کرلے گی۔ حمزہ شہبازپر آمدن سے زائد اثاثہ جات کا کیس ہے ۔