kashmir

پاکستانی سچ ثابت ہو گئے

EjazNews

جولائی 2019ء پوری دنیا کے لیے پریشانیوں کا باعث تھا۔ بہت سے اور واقعات کے ساتھ ساتھ سب سے اہم مسئلہ ایشیاء کے دو ممالک پاکستان اور بھارت تھے دونوں ایٹمی قوتیں تھیں اور ساتھ میں ایک دوسرے کیخلاف سخت جذبات رکھنے والےہیں اور بات ہے اب اس کی شدت بھارت میں بہت بڑھ گئی ہے اس کی شاید ایک وجہ یہ بھی ہے کہ وہاں پر ایک شدت پسند حکومت بھی ہے اور شدت پسندگی کی جڑیں پاکستان کی نسبت بہت زیادہ مضبوط ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں پلوامہ کے مقام پر ایک کشمیری نوجوان نے قابض فوج کے ایک قافلہ پر حملہ کر دیا جس کے نتیجے میں بھارتی فوج کے جوانوں کی ہلاکتیں ہوئیں۔اور اس کے ساتھ ہی انڈین میڈیا نے پاکستان پر الزام لگانے شروع کر دئیے۔

پلوامہ حملہ ایک کشمیری نوجوان نے انڈین ظلم و جبر کے جواب میں کیا تھا

اس حملے کے بعد انڈیا سے ایسے تاثرات آنا شروع جیسے پاکستان پر آج حملہ کیا کل کیا۔ اور ایک دن خبر ملی انڈیا نے سرجیکل سٹرائیک کی ہے لیکن جب حقائق کا پتہ کیا گیا تو یہ سٹرائیک صرف انڈین میڈیا پر تھی زمین پر کہیں نہیں۔ اس دعویٰ کے دو دن بعد پاکستان نے دو انڈین طیارے گرائے اور ایک ہائلٹ گرفتار کر لیا۔گرفتار پائلٹ دنیا کے سامنے پیش کر دیا۔

انڈین پائلٹ جسے پاکستان نے گرفتار اور بعد ازاں امن کے لیے رہا کر دیا

دو میں سے ایک طیارے کی تباہی انڈین ائیرفورس اور حکومت نے مان لی اور ساتھ دعویٰ کر دیا کہ پاکستان کا ایک ایف 16 انہوں نے بھی گرایا ہے۔ یہ دعویٰ دنیا کے لیے حیرت سے بھرپور تھا کیونکہ انڈین فوج کے طیاروں میں ایف16 جیسے طیاروں کے برابر اڑنے تک کی صلاحیت نہیں گرا کیسے سکتے ہیں۔ اس پر تحقیقات شروع ہو گئیں۔ اور گزشتہ روز امریکی رپورٹ سامنے آئی جس کے مطابق پاکستان کے پاس جو طیارے ہیں ان کی گنتی کی گئی وہ پورے ہیں۔ انڈین دعویٰ جھوٹا نکلا۔

یہ بھی پڑھیں:  بچے پڑھنے میں دلچسپی کیوں نہیں لیتے؟

ایف 16 کا جھوٹ بے نقاب ہونے پر اب نئے سوالات جنم لینا شروع ہو گئے ہیں۔ برطانوی میڈیا کے مطابق یہ خبر مودی کیلئے ایک دھچکا ہے۔اب وقت ہے سوالات کا ہے۔ بھارتی ہرفیسراشوک سوائن کہتے ہیں کہ یہ مودی کے میڈیانے دعوی کیا تھا کہ ابھینندن نے پاکستانی ایف16 گرایا تھا۔ آسٹریلوی تھنک ٹینک سڈنی ڈیموکریسی نیٹ ورک کے ماہر دیہا سیش رائے چوہدری کا کہنا تھا بھارت نے پاکستان کا طیارہ ۔نہیں۔گرایا۔ بلکہ اپنا ہیلی کاپٹر گرایا۔بھارتی حکومت اور فضائیہ نے بھی کئی ہفتوں بعد بھی صورتحال کو واضح نہیں کیا۔اگر میں یہ سوال کروں کہ کتنے فوجی مارے گئے ہیں تو میں ملک دشمن قرار پائوں گا۔

اب بہت سے ذہنوں میں یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ بھارتی فوجی جس پرزے کو دکھا کر ایف16 طیارے کو گرانے کا دعوی کر رہے تھے اسے چیک کیا جائے اور اگر وہ ایف 16 کا ہے تو پتہ چلایا جائے کہ طیارے کا یہ ملبہ کہاں سے آیا اور کون ایسی چیزوں کی سیل کرتا ہے۔ کہیں انڈین فوج کے خفیہ مراسم بلیک مارکیٹ کے ساتھ تو نہیں ہے۔ اس کے لیے ضروری ہے اس بات کا پتہ چلایا جائےکہ وہ طیارہ کہاں سے آیا ہے۔ اس پرزے کو چیک کر کے اور بہت سے راز کھل سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  کراچی کا درجہ حرارت کم ہو سکتا ہے صرف درخت، درخت اور درختوں سے