imran khan karachi

وزیراعظم کا کراچی کیلئے پیکج۔گھوٹکی میں خطاب۔لاہور میں ٹرین کا افتتاح

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے کراچی کے لیے 162 ارب کے پیکج کا اعلان کر دیا۔تقریب سے لطاب کرتے یوئے ان کا کہنا تھا کی کراچی کی ترقی میں ہی پاکستان کی ترقی ہے۔بدقسمتی سے کراچی کی ترقی رک گئی جس سے پورے پاکستان کی ترقی رک گئی۔ان کا کہنا تھا جب میں کرکٹ کھیلتا تھا ہر طرف سبزہ تھا۔آج پاکستان گلوبل وارمنگ میں پاکستان آٹھواں ملک ہے۔ اگر ہم نے درخت نہ لگائے تو آنے والی نسلیں ہمیں معاف نہیں کریں گی۔ ہماری حکومت نے پانچ سال میں 10 ارب درخت لگانے کا منصوبہ بنایا ہے۔ کراچی میں باغ ابن قاسم کا افتتاح کرتے ہوئے انہوں نے مئیر کراچی کو خراج تحیسن پیش کیا ان کا کہنا تھا کراچی والوں کو گھر سے باہر آنے کی اچھی جگہ میسر آئی ہے ایسے اور بہت سے منصوبوں کی ضرورت ہے۔ تاکہ شہریوں کو تفریح کی مزید سہولیات میسر آ سکیں

یہ بھی پڑھیں:  آئی ایم ایف نے پاکستان کیلئے 6 ارب ڈالرز کی منظوری دیدی

گھوٹکی میں خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ سندھ پاکستان کا سب سے خوشحا صوبہ ہونا چاہئے تھا۔کراچی پاکستان کا فنانشل کیپیٹل ہے۔سب سے زیادہ گیس سندھ سے نکلتی ہےسندھ کی زمین زرخیز ہے۔ چاول کپاس ۔گنا سب کچھ ہے کیا۔وجہ ہے سندھ میں پورے ملک سے۔زیادہ غربت ہے۔ وجہ ایک ہے کرپشن۔اسی وجہ سےسندھ غریب ہے۔کرپشن زیادہ غربت رکھنے والے ملک میں بھی غربت پھیلا دیتی ہے۔ وزیراعظم کا مزید کہنا تھا سندھ کی 70 فیصد گیس گھوٹکی سے نکلتی ہے۔ 250 گیس کے کنوئیں ہیں۔پتہ کرایا تو 10 سال میں صرف سندھ میں گیس رائیلٹی کی مد میں 234 ارب آئے۔ 234 ارب سے گھوٹکی کو کتنے ملے۔یہ ہے کرپشن۔کرپشن کا فیصلہ منی لانڈرنگ کے ذریعے بیرون ملک چلا گیا ہے۔چوری شدہ پیسہ تھوڑے لوگوں کی جیب میں جاتا ہے اگر ہاتھ ڈالوتو جمہوریت خطرے میں ہے۔

وزیراعظم عمران خان اور گورنر سندھ

وزیراعظم نے اپنی تقریر میں کہا سندھ میں تبدیلی لانی ہے۔یہاں آتا رہوں گا۔ نئے پاکستان میں نکلنے والے ذخائر پسماندہ علاقوں کو فائدہ پہنچائیں گا۔

یہ بھی پڑھیں:  پنجاب حکومت کی کارکردگی ،وزیراعلیٰ پنجاب کے ٹویٹ

لاہور میں خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ سڑکوں پر دبائو کم کرنے کیلئے ٹرین ٹیکنالوجی کو جدید بنانا ہو گا۔ ٹرین ٹیکنالوجی میں آگے بڑھنے کیلئے چین سے مدد لیں گے۔ ہمارے ہاں انگریز جو پٹڑی چھوڑ کر گیا تھا۔ اس میں 2ہزار کلومیٹر کمی آگئی ہے جبکہ پوری دنیا میں یہ بڑھی ہے۔ وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ تمام تنخواہ داروں کو بھی ہیلتھ کارڈ ملنا چاہئے۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ وزیراعلی پنجاب۔ وزیر ریلوے ۔گورنر پنجاب سمیت دیگر اہم شخصیات موحود تھیں۔