dream

خواب بیماری کی پیشگی علامت بھی ہیں

EjazNews

گزشتہ چند سالوں میں سائنسدانوں نے جہاں دماغ پر بہت تحقیق کی ہے ،وہاں خوابوں کو بھی انہوں نے اپنی تحقیق کا مرکز و محور بنایا ۔وہ یہ جاننا چاہ رہے تھے کہ خواب کس طرح انسانی دماغ میں آتے ہیں اور یہ کیوں پیدا ہوتے ہیں اور ان کی وجوہات کیا ہیں اور ان کے پیدا ہونے سے انسانی صحت پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں اور یہ انسانی صحت میں کسی خرابی کی علامت تو نہیں ان سوالوں کا جواب انہیں ہاں میں ملا۔ سب سے پہلے تو انہوں نے یہ دیکھا کہ خواب نیند کے کس مرحلے میں پیدا ہوتے ہیں یعنی سونے کے پہلے یا سونے کے بعد ۔تحقیق سے پتہ چلا کہ زیادہ تر خواب آنکھیں بند کرنے کے بعد سونے کے دوران آتے ہیں ۔ نیند کا یہ وہ مرحلہ ہے جب ہم خواب دیکھتے ہیں اس کا تعلق برین انسٹمنٹ سے ہے۔
یونیورسٹی آف ٹورینٹو سے نیوروسائنس سے منسلک ڈاکٹر پیون کے خیال میں خوابوں کو کنٹرول کیا جاسکتا ہے۔ دراصل یہ خلیے ہی ریپیڈ آئی موومنٹ کے درمیان خواب کا سبب بنتے ہیں۔ ان خلیوں پر تحقیق کے ذریعے سے خواب دیکھنے والے لوگوں کے خلیوں میں پائی جانی والے خلیوں کا بھی پتہ چلایا جاسکتا ہے۔ دراصل اب نارمل خواب نیند کے دوران خرابی کوظاہر کرتے ہیں۔ 80فیصد افراد پارکسنز سمیت کئی مختلف بیماریوں میں مبتلا پائے گئے۔ دراصل یہ خرابی ہی ان بیماریوں کی اولین وارننگ ہے ۔ خوابوں کی وارننگ انہیں بیماریوں سے 15سال پہلے ملیں۔ اصل میں خواب پر تحقیق کے ذریعے بیماری کی جڑ کو پکڑا جاسکتا ہے۔
سائنسدان مختلف خوابوں کے دوران محرک ہونے والے ان اعصابی خلیوں پر تحقیق کر رہے ہیں ان کا تعلق اعصابی نظام کی کارکردگی سے ہے۔ ڈاکٹر جان پیور نے خوابوں کے بارے میں لوگوں کو وارننگ دی ہے۔ انہوںنے خبر دار کیا ہے کہ خوابوں کا تعلق مختلف اعصابی بیماریوں کے ساتھ ہوتا ہے۔ خواب دراصل اعصابی بیماریوں کے باعث پیدا ہوتے ہیں۔ یہ تحقیق خود ان کے لیے بھی حیران کن نتائج کی حامل ہے۔ انہوں نے درجنوں لوگوں پر تحقیق کی تو پتہ چلا کہ خواب دیکھنے والے مختلف اعصابی بیماریوں میں مبتلا تھے جن کا خود انہیں علم نہ تھا۔
کینیڈین نیورو سائنس کے سالانہ اجلاس میں ڈاکٹر پیو ر نے اپنے تحقیقی مضمون میں بتایا کہ خوابوں کے بارے میں ہزاروں خیالات اور نقطہ نظر پائے جاتے ہیں۔ کچھ کہتے ہیں کہ یہ مستقبل کی نشاندہی کرتے ہیں کچھ کے خیال میں لا شعور میں چھپی خواہشات کا نتیجہ ہے۔ سائنس اب خوابوں پر تحقیق کو فروغ دے گی،ان کی تحقیق کے مطابق خوابوں نے کئی پیچیدہ سائنسی مسائل کو حل کیا ہے۔ اس سے سیلف کنٹرول پر مدد ملی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بغیر بیمار ہوئے طبی معائنہ کیوں ضروری ہے
کیٹاگری میں : صحت