نومسلم بہنوں کو دارالامان منتقل کر دیا گیا

EjazNews

اسلام آباد ہائی کورٹ میں آج نو مسلم بہنوں کی جانب سے دائر تحفظ جان کی درخواستوں پر سماعت ہوئی جس میں جج نے لڑکیوں کو گرفتار نہ کرنے اور دارالامان منتقل کرنے کا حکم دیا۔نو مسلم بہنوں کے خاوند وں نے بھی عدالت سے تحفظ کی درخواست کی تھی جس پر ہائی کورٹ نے ان کی 12دن ضمانت منظور کرلی اور انہیں گرفتار نہ کرنے کا حکم دیا ۔ ساتھ ہی عدالت نے وزیر انسانی سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے۔ عدالت نے دونوں بہنوں کے شوہروں برکت اور صفدر کی ضمانتیں 50-50ہزار روپے کے عوض منظور کرلیں۔
جبکہ دوسرطرف نادرا میں ان دونوں بہنوں کا ر یکارڈ موجود نہیں ہے۔لیکن یہ کوئی حیرانی والی بات نہیں ہے کیونکہ اگر ہم پاکستانی معاشرے کی طرف دیکھیں تو آپ کو آج بھی دور دراز کے علاقے تو ایک طرف شہروں میں بھی آپ کو بہت سے ایسے لوگ مل جائیں گے جو آج بھی نادرا کے پاس رجسٹرڈ نہیں ۔ جنہوں نے اپنے بچوں کی رجسٹریشن ہی نہیں کروائی ہوئی ۔ دیہاتوں کی بات تو بہت دور کی ہے اور خاص کر اگر ہم اندرون سندھ، پنجاب کے آخری کونوں ، خیبر پختونخوا کے دور دراز کے علاقوں اور بلوچستان میں آپ کو بے تحاشا لوگ ایسے مل جائیں گے جو نادرا میں آج بھی رجسٹرڈ نہیں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  بدقسمتی سے پاکستان کی جامعات میں طلبہ یونینز میدان کارزار کا روپ دھار گئیں اور جامعات میں دانش کا ماحول مکمل طور پر تباہ ہوکر رہ گیا:وزیراعظم