42 پاکستانیوں کے قاتل رہا

EjazNews

18 فروری 2007 کو سمجھوتہ ایکسپریس مسافروں کو لے کر پاکستان میں آ رہی تھی۔کہ ہریانہ کے ایک گاوں سے گزرتے ہوئے اس میں دھماکہ ہو گیا۔ دھماکہ میں 68لوگ اس جہان فانی سے چلے گئے ان میں سے 42 پاکستانی تھے۔ آنکھوں دیکھی درد کی ایسی داستانیں رقم ہوئیں کہ یاد کر کےروح کانپ اٹھتی ہے۔اس وقت کی انڈین حکومت ملزمان تک پہنچنے میں کامیاب ہو گئی اور انہیں گرفتار بھی کر لیا۔ اس دھماکہ کے ماسٹر مائنڈ نے ہندو انتہا پسند جماعت کے ملوث ہونے کا اعتراف کیا تو اسے اس کے گھر کے پاس ہی قتل کر دیا گیا۔ باقی ملزمان پر کیس چلتا رہا اور آج انہیں کوئی ثبوت نہ ہونے پررہا کر دیا گہا۔سوامی آسیم نند سمیت تین ملزم اور رہا ہوئے ہیں۔

پاکستان نے انڈین ہائی کمیشن کو دفتر خارجہ طلب کر کے اپنے شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ اب سب سے اہم بات ان 42 خاندانوں کی ہے کہ وہ اپنوں کے قاتل کو کہاں ڈھونڈیں۔

یہ بھی پڑھیں:  کورونا وائرس : پھیلاﺅ کے خطرے کے پیش نظر واہان شہر سیل