punjab

پنجاب حکومت کی کارکردگی ،وزیراعلیٰ پنجاب کے ٹویٹ

EjazNews

مذاکرات کے ٹکرائو کے خاتمے کے لیے ایک آزاد اور خود مختار کمیشن قائم کیا گیا ہے۔ تمام عوامی عہدیدار اس کمیشن کو جوابدہ ہوں گے اور ذاتی مفاد کو سرکاری مفاد پر ترجیح دینے والے کیخلاف کارروائی بھی کی جائے گی۔
ایک اور اہم بل کے تحت پنجاب سکلز ڈویلپمنٹ اتھارٹی کاقیام عمل میں لایا گیا ہے۔ جس کا مق صد ٹیکنیکل ایجوکیشن اور ووکیشنل ٹریننگ کو جدت دینا ہے یہ اتھارٹی تمام اداروں کی کارکردگی لائسنسنگ اور نصاب کا جائزہ لے گی اور ضرورت کے مطابق ہنر ند افراد تیار کرے گی ۔
گھر ملازمین بالخصوص خواتین اور بچوں کو معاشرتی اور قانونی تحفظ دینے کے لئے ڈومیسٹک ورکرز بل متعارف کرایا گیا ہے۔ اس بل میں کم عمر ملازمین پر پابندی اور ڈومیسٹک ورکرز کے بنیادی حقوق کی فراہمی کیلئے قانون سازی کی گئی ہے جس پر سختی سے عملدرآمد کروایا جائے گا۔
تحریک انصاف کی حکومت نے تمام شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی کو اپنی ترجیح بنایا ہے اس مقصد کے لئے اب پاک اتھارٹی کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جو پالیسی سازی فنڈنگ اور آگاہی پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ واٹر سپلائی سکیمز ، فلٹریشن پلانٹس اور واٹر ٹیسٹنگ کی نگرانی کرے گی۔
حکومت اور سرکاری افسران کا عوام کی ہمہہ وقت خدمت کرنا احسان نہیں بلکہ فرض ہے۔ رائٹ ٹو پبلک سروس کے تحت شہری تمام تر سہولیات اور خدمات بروقت حاصل کر سکیں گے اور بلا جواز کسی شہری کو کسی خدمت سے محروم رکھنے والے عہدیدار کیخلاف تادیبی کارروائی کی جائے گی۔
پنجاب میں تمام اداروں میں مثبت تبدیلی اور بنیادی ڈھانچے کے خدوخال واضح کرنے کیلئے قانون سازی کی جارہی ہے۔ پنجاب اسمبلی نے 7ماہ کے قلیل عرصے میں مفادات کے ٹکرائو کے خاتمے سمیت 14نئے بل پاس کرلیے ہیں اور مزید قوانین پر کام جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بلائنڈ کرکٹ سیریز: پاکستانی ٹیم نے سری لنکا کو شکست دے دی