mm alam

1965ء کی جنگ کے ہیرو۔ایم ایم عالم

EjazNews

ایک ہی محاذ میں 1965ء کی پاک بھارت جنگ میں پانچ طیارے گرانے والا پاکستانی ہیر و 6جولائی 1935ء کو کلکتہ میں پیدا ہوئے ۔1951ء میں سندھ گورنمنٹ ہائی سکول ڈھاکہ سےتعلیم مکمل کی۔1952ء میں فضائیہ میں بھرتی ہوئے اور 2اکتوبر1953ء کو کمیشنڈ کے عہدے پر فائز ہوئے۔ پاک فضائیہ کی تاریخ کا درخشند ہ ستارہ محمد محمود عالم المعروف ایم ایم عالم نے 1965ء کی پاک بھارت میں ایسی تاریخ رقم کی جو ہمیشہ یاد رکھی جائے گی۔ بطور پائلٹ ایم ایم عالم نے دشمن کے پانچ طیاروں کو چشم زدن میں زمین بوس کر دیا۔اپنی ائیر فورس کی زندگی میں انہوں نے مجوعی طور پر نو بھارتی طیاروں کو گرایا۔ ان کا یہ کارنامہ نہ صرف پاک فضائیہ بلکہ جنگی ہوا بازی کی تاریخ کا بھی ایک معجزہ تصور کیا جاتا ہے۔پاک بھارت کی جنگ کے بعد 1967ء میں بطور اسکوارڈرن کمانڈر برائے اسکواڈرن اول کے طور پر ڈسالٹ میراج سوئم لڑاکا طیاہ کے لیے ہوا جوکہ پاکستان ائیر فورس نے بنایا تھا۔1982ء میں ریٹائرڈ ہوگئے۔وطن کے اس عظیم ہیرو کو ان کے تاریخ ساز کارنا مے پر ستارہ جرأت سے نوازا گیا۔ جبکہ لاہور میں گلبرگ کے مقام پر ایک اہم سڑک کا نام ایم ایم عالم روڈ رکھا گیا ہے۔18مارچ 2013ء کو 78 برس کی عمر میں دنیائے فانی سے کوچ کر گئے۔
سماجی رابطہ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ڈاکٹر محمد فیصل نے اپنے پیغام میں کہا کہ ’’قوم اپنے ہیرو ایم ایم عالم کی چھٹی برسی آج منارہی ہے ۔ ایم ایم عالم نے 1965ء کی جنگ میں ایک منٹ میں دشمن کے 5طیارے گرائے، ایم ایم عالم اپنا سیبر 86 جیٹ طیارہ اڑا رہے تھے۔‘‘
ایم ایم عالم کو یہ اعزاز حاصل کہ انہوں نے 1965ء کی پاک بھارت جنگ میں سرگودھا کے محاذ پر پانچ انڈین ہنٹر جنگی طیاروں کو ایک منٹ کے اندر اندر مار گرایا ،جن میں سے چار ابتدائی تیس سیکنڈ کے اندر مار گرائے گئے تھےاور یہ ایک عالمی ریکارڈ تھا۔

یہ بھی پڑھیں:  اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف اور نیب