نیوزی لینڈ کی 2مساجد میں فائرنگ49افرادجاں بحق

EjazNews

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں واقع 2مساجد اور ہسپتال میں مسلح افراد نے اندھا دھند فائرنگ کر دی، افسوسناک واقع میں 40افراد جاں بحق جبکہ درجنوں زخمی ہو گئے ہیں۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق نماز جمعہ کے دوران مساجد میں موجود نمازیوں پرفائرنگ کی گئی۔ حملہ آوروں نے النورمسجد اور لین وڈ میں نمازیوں کو نشانہ بنایا۔ مسجد میں بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی بھی موجود تھے جو اس واقع میں محفوظ رہے۔بنگلہ دیش کرکٹر تمیم اقبال نے سماجی رابطہ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ پوری ٹیم محفوظ ہے ہمارے لیے دعا کریں۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ فائرنگ کے واقع میں متعدد افراد کو گولیاں لگی ہیں جن کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔ کرائسٹ چرچ میں پولیس حکام نے لوگوں کوگھروں میں رہنے کی ہدایت کی ہے۔ زخمیوں کو طبی امداد کےلئے قریبی ہسپتالوں میں منتقل کیا جارہا ہے۔نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے فائرنگ کے واقع کے بعد ہنگامی پریس کانفرنس کے دوران کہا ہے کہ آج کا دن نیوزی لینڈ کی تاریخ کا سوگوار دن ہے۔ ایسے پر تشدد واقعات کی نیوزی لینڈ میں کوئی جگہ نہیں۔
غیر ملکی میڈیا کے مطابق حملے میں ملوث ایک دہشت گرد نے ہیلمٹ پہن رکھاتھا جس پر کیمرہ نصب تھا۔ دہشت گرد نے قتل و غارت گری کی فوٹیج براہ راست سوشل میڈیا پرتشر کی۔

یہ بھی پڑھیں:  ہانگ کانگ میں پر امن مظاہروں کے بعد پرامن انتخابات

ترجمان دفتر خارجہ نے سماجی رابطہ کی ویب سائٹ پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ پاکستان نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کے واقع کی شدید مذمت کرتا ہے۔ ہمارا ہائی کمیشن مقامی حکام سے رابطہ میں ہے۔ مکمل تفصیلات حاصل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے

نیوزی لینڈ پولیس کے مطابق انہوں نے 4لوگوں کو گرفتاری کر لیا ہے جن میں سے 3مرد اور ایک خاتون ہے۔
جبکہ میڈیا رپورٹس کے مطابق بنگلہ دیشی ٹیم کو واپس بلا لیا گیا ہے