National

کچھ باتیں اسمبلی اجلاس کی

EjazNews

ذوالفقار علی بھٹو نے ایٹمی پروگرام جبکہ بے نظیر بھٹو نے میزائل پروگرام دیا،بلاو ل بھٹو زرداری جبکہ شاہ محمود قریشی کہتے ہیں بلاول بھٹو کے اظہار یکجہتی کو ہم سراہتے ہیں۔
اسمبلی اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے بلاو ل بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ بھارتی فضائیہ کی جانب سے دراندازی کی کوشش کو ناکام بنانے پر پاک فضائیہ کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں، پاک فضائیہ دنیا کی بہترین فضائیہ ہے۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھاکہ ذوالفقار علی بھٹو نے پاکستان کو ایٹمی پروگرام اور بے نظیر بھٹو نے میزائل پروگرام دیا۔بلاول بھٹو کا کہنا تھا بھارت نے 1971ء کے بعد ننگی جارحیت کا ارتکاب کیا، دو ایٹمی قوتوں پاکستان اور بھارت کے درمیان جنگی کشیدگی کا ذمہ دار مودی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دنیا شاید نریندر مودی کو نہ جانتی ہو لیکن برصغیر کے مسلمان گجرات کے قصائی کو اچھی طرح جانتے ہیں، گجرات کے قصاب کے ہاتھ مسلمانوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں۔ مہذب ممالک نے اس انتہا پسند کو ویزا دینے سے انکار کیا، مودی حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوز مظالم کا بدترین ریکارڈ قائم کیا۔ مقبوضہ کشمیر میں اقوام متحدہ کی قرار دادوں کی خلاف ورزی کی جارہی ہے۔ پلوامہ کا حملہ کسی دوسرے ملک کے شہری نے نہیں بلکہ مقبوضہ کشمیر کے مقامی نوجوان کا بھارت کے ظلم و ستم کے خلاف رد عمل تھا۔
ان کا کہنا تھا کہ پاک بھارت کشیدگی کے دوران اپوزیشن ذمہ داری کا مظاہر ہ کرے۔ تمام تر اختلافات کے باوجود پالیسی، معیشت اور دہشت گردی پر حکومت کے ساتھ کام کرنے کے لیے تیارہیں۔ وزیراعظم نے ان کیمرہ اجلاس میں شرکت نہیں کی جو افسوسناک بات ہے۔
دوسری جانب شاہ محمود قریشی کہتے ہیں پاکستان کے مفاد کے لیے سب متحد ہیں، بلاول بھٹو کے اظہار یکجہتی کو ہم سراہتے ہیں، بھارتی طیارے گرانے والے پائلٹس کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔بھارتی جارحیت کا پاکستان نے فوری منہ توڑ جواب دیا، دونوں پائلٹس ہیرو ہیں۔ وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ حکومت کے حالیہ اقدامات ملک کے مفاد میں ہیں، اپوزیشن رہنمائوں نے بھی اوآئی سی اجلاس کے بائیکاٹ کی حمایت کی ، بھارتی پائلٹ کو قومی مفاد میں رہا کیا۔

یہ بھی پڑھیں:  کیبنٹ نے امدادی رقم کی منظوری دے دی، 8اپریل سے ملنا شروع ہو جائے گی

ان کا کہنا تھا کہ نیشنل ایکشن پلا ن پر ہماری حکومت اس کی روح کے مطابق عمل درآمد کر کے دکھائے گی۔