موٹاپے سے نجات آپ کی صحت کے لیے ضروری ہے

EjazNews

جسم میں زیادہ چربی جمع ہونے کا نام موٹاپا ہے۔ یہ اپنے آپ میں کوئی مرض نہیں ہے لیکن یہ بہت سے امراض کا دروازہ کھول دیتا ہے۔ جیسے ذیابیطس ، خون کا دباؤ، دل کے امراض، السر ، لقوہ، جلد کے امراض، بے خوابی، گھٹیا ، دمہ، بانجھ پن ، نامردی وغیرہ۔
وجوہات
زیادہ سے زیادہ خوراک کھانا، کاہلی، زیادہ سونا، جسمانی ورزش کی کمی، بیٹھے بیٹھے کھاتے رہنے کی عادت ، زیادہ چکنائی والی غذاکھانا، میدا ، نمکین ، تلی بھنی ہوئی چیزوں کا زیادہ استعمال، شراب نوشی، تمباکو نوشی، چائے، کافی، پان، تمباکو وغیرہ کا استعمال، تنائو، خاندانی اور دوائوں کا زیادہ استعمال۔
جدید تحقیق
اگرآپ ہفتہ وار تعطیل کے موقع پر اپنی نیند پوری کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو یہ عادت موٹاپے کا باعث بن سکتی ہے۔ یہ بات امریکہ میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔ کولورڈو یونیورسٹی کی تحقیق میں دریافت کیا گیا ہے کہ پورے ہفتے میں نیند پوری نہ کرنے والے افراد جو ہفتہ وار تعطیل پر زیادہ وقت سونا پسند کرتے ہیں ان میں موٹاپے اور ذیابیطس کا خطرہ بہت زیادہ ہوتا ہے اور یہ خطرہ ان لوگوں میں اس سے بھی زیادہ ہوتا ہے جو پورا ہفتہ نیند کی کمی کا شکار ہوتے ہیں مگر چھٹی کے دن بھی اس کمی کو پورا کرنے کی کوشش نہیں کرتے۔ تحقیق میں زور دیا گیا کہ روزانہ 7سے 8گھنٹے کی نیند بے وقت منہ چلانے کی خواہش کی روک تھام کے لیے ضروری ہے اور اس سے میٹا بولک صحت بہتر ہوتی ہے۔ اس تحقیق کے دوران 18سے39سال کے صحت مند افراد کا جائزہ2ہفتے تک لیا گیا اور دیکھا گیا کہ ان کی نیند اور غذائی عادات کیا ہیں۔ ان رضا کاروں کو 3گروپس میں تقسیم کیا گیا، ایک گروپ کو9گھنٹے کی نیند کا مزہ مسلسل 9دن تک لینے دیا گیا ہے، دوسرے گروپ کو اتنے دنوں میں رات بھر میں صرف5 گھنٹے جبکہ تیسرے گروپ کو5دن 5گھنٹے جبکہ 2دن ہفتہ وار تعطیل کی طرح اضافی نیند کا مزہ لینے دیا گیا اور پھر2دنو ں کے لیے5گھنٹے سونے کا کہا گیا۔ نتائج سے معلوم ہو ا کہ 9گھنٹے نیند کے مقابلے میں باقی دونوں گروپ میں جنک فوڈ کا استعمال بڑھ گیا جس سے جسمانی وزن میں اضافہ ہوا جبکہ انسولین حساسیت میں کمی دیکھنے میں آئی۔ جو کہ ذیابیطس کا انتباہی اشارہ ہے۔ محققین کا کہنا تھا کہ لوگوں میں عام پائے جانے والا یہ رویہ غلط ہے کہ ہفتہ وار تعطیل کے موقع پر نیند کی کمی پوری کی جاسکتی ہے یہ صحت کے لیے تباہ کن عادت ہوتی ہے اس تحقیق کے نتائج طبی جریدے جرنل کرنٹ بائیو لوجی میں شائع ہوئے۔
قدرتی علاج
خوراک آہستہ آہستہ گھٹاتے ہوئے کچھ دن پینے والی چیزوں پر رہیں پھر ضرورت کے مطابق کچھ دن بغیر آگ کی پکی کچی چیزیں کھا کر رہیں۔بعد میں عام خوراک پر آنے پر چوکر سمیت آٹے کی روٹی ،ابلی ہوئی سبزی لیں ، بھرپور پھل، سلاد لینا جای رکھیں۔ کافی مقدار میں پانی پئیں۔ صبح خالی پیٹ نیم گرم پانی میں نیمبو کار س ڈال کر پئیں۔ غذا کو منہ میں اتنا چبائیں کہ منہ میں ہی پانی ہو جائے۔ گھی، مٹھائیاں، تلی بھنی چیزوں کا کھانا ایک دم بند کر دیں ۔ کھانا کھانے کے بعد پیشاب ضرور کریں ۔

یہ بھی پڑھیں:  صحت کیلئے سردیوں کی دھوپ کتنی فائدہ مند ہے؟
کیٹاگری میں : صحت