فلسطینی پانچ سال بعد عمرہ کی سعادت حاصل کر پائے

EjazNews

اسرائیل کے ظلم و بربریت کے خلاف احتجاج بلند کرنے والے غزہ کے شہریوں کو پانچ سال بعد عمرے پر جانے کی اجازت مل گئی جس کے بعد آٹھ سو فلسطینی شہریوں کا پہلا قافلہ گزشتہ روز براستہ مصر سعودی عرب روانہ ہوا تھا۔ غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ 2013ء میں مصری صدر محمد مرسی کی حکومت کے خاتمے کے بعد2014ء میں رفاہ سرحد کو ملٹری آپریشنز کے باعث بند کر دیا گیا تھا۔2014ء کے بعد 2019ء میں فلسطینی عمرہ کی سعادت حاصل کر پائیں گے۔فلسطینی رفاہ سے قاہرہ انٹرنیشنل ائیر پورٹ اور وہاں سے سعودی عرب روانہ ہوئے۔غزہ پٹی میں مقیم 20لاکھ باشندے 2014ء سے عمرے کی سعادت سے محروم تھے۔عمرے کے لیے مکہ مکرمہ جانے والی فلسطینی خاتون کا کہنا تھا کہ ہم پانچ برسوں سے عمرے کی سعادت حاصل کرنے کے لیے بے تاب تھے۔
ہزارو ںفلسطینی شہری براستہ مصر حج کی ادائیگی کے لیے ہر سال سعودی عرب جاتے ہیں لیکن انہیں عمرے پر جانے کی اجازت نہیں تھی۔ رفاہ وا حد سرحد ہے جس پر صہیونی ریاست اسرائیل کا قبضہ نہیں ہے لیکن یہ سرحد گزشتہ کئی برسوں سے بند تھی۔

یہ بھی پڑھیں:  امریکہ نے کسی امریکی شہری کی رہائی کیلئے کوئی رقم نہیں دی:ڈونلڈ ٹرمپ