سونے سے پہلے کی کچھ احتیاطی تدابیر،صحت کی ضامن

EjazNews

صحت کے لیے نیند کا اہم مقام ہے۔ نیند کے بعد جسم سے زہریلے مادے باہر نکل جاتے ہیں اور کمزور سیلز کی تکمیل ہو جاتی ہے۔ جس سے جسم میں طاقت آجاتی ہے۔ حسب ضرورت نیند نہ لینے یا مصنوئی طریقوں (چائے ، کافی وغیرہ ) کے ذریعے زیادہ جاگنے سے بہت امراض پیدا ہو جاتے ہیں۔ضرورت سے زیادہ سو نا بھی نقصان دہ ہے۔
سونے سے تین گھنٹے پہلے کھانا کھا لینا چاہئے یہ آپ کی صحت کے لیے بہت ضروری ہے۔ شام کو جلدی سونا اور صبح جلدی جاگنا چاہئے۔ سونے سے پہلے منہ، دانت ، زبان، تالو صاف کر لینا چاہئے، سونے سے پہلے پاخانہ پیشاب کرلینا چاہئے ۔
تنگ کپڑے پہن کر نہیں سونا چاہئے، ٹیلی ویژن ، فلم وغیرہ کو سنے کے وقت رکاوٹ نہیں بنانا چاہئے۔ بستر صاف ستھر ہو لیکن زیادہ نرم یا موٹے گدے والا نہ ہو اور تکیہ پتلا ہو ۔ سونے کا کمرہ ہوا دار اور صاف ہونا چاہئے، بائیں کروڑ، پیٹ کے بل (جیسے بچہ سوتا ہے) سونا چاہئے۔سونے کے وقت دل و دماغ کو بھٹکانے کی بجائے بہتر ہے کہ آپ دماغی یا روحانی ترقی کرنے والی کتابیں پڑھیں یا کسی غیر جانب دار چیز پر توجہ مرکوز کریں جیسے سانس لینے چھوٹنے پر ، تلاوت کلام پاک پر ۔سونے سے پہلے آپ کچھ لمحات اپنے اندر گہرائی سے جھانک کر اپنی بہتر کے لیے فیصلہ کر سکتے ہیں، سونے سے ٹھیک پہلے اس طرح کے خیالات آپ کے تحت الشعور کے ذریعہ آسانی سے قبول کرل یے جاتے ہیں اور پھر وہ ان کے مطابق کام شروع کردیتا ہے۔پاکیزہ غذا اور پاکیزہ ڈھنگ سے زندگی جیسے سے زیادہ پر سکون آرام دہ نیند آتی ہے۔ نیند لانے والی دوائوں کا استعمال نہیں کرنا چاہئے۔ دوائوں سے بھلے ہی نیند آجائے لیکن لمبی مدت تک دوائیں لیتے رہنے سے نقصان ہی ہوتا ہے۔زیادہ جسمانی محنت کرنے والوں کو زیادہ نیند لینے کی ضرورت ہوتی ہے ۔ عام آدمی کے لیے آٹھ گھنٹے کی نیند کافی ہے۔ بڑی عمر والوں کے لیے چھ گھنٹہ کی نیند کافی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  دنیا بھر میں تقریباً 5ہزار بچوں میں سے ایک ہیموفیلیا کا شکار ہے
کیٹاگری میں : صحت