آئیے جانتے ہیں پیازکے بارے میں

EjazNews

پیاز ایک مشہور و معروف جڑ ہے۔ یہ گانٹھ دار پودا ہے۔ سفید ، سرخ اور زرد رنگوں میں پایا جاتا ہے۔ اسے عربی میں بصل، بنگالی میں پیاج،، پنجاب میں گنڈا، فارسی میں پیاز اور انگلش میں Onionکہتے ہیں۔ اس کی تمام اقسام میں فیٹس یعنی چکنائی بہت کم ہوتی ہے جبکہ کولیسٹرول بالکل نہیں ہوتا۔
تاریخی اعتبار سے اس کی موجودگی کا پتہ اس دور سے چلتا ہے جب پانچ ہزار برس قبل مصر کی تہذیب کا آغاز ہوا اور اہرام تعمیر ہونے شروع ہوئے۔ کہا جاتا ہے کہ دنیا کی پہلی ہڑتال پیاز ہی کی وجہ سے ہوئی جب اہرام تعمیر کرنے والے مزدور سوکھی روٹی کھا کھا کر تنگ آگئے اور انہوں نے اپنی غذا میں پیاز شامل کرنے کے لئے احتجاج کیا۔ حضرت موسیٰ علیہ السلام کے دور میں بھی بنی اسرائیل اللہ کی دی ہوئی نعمت من و سلویٰ کے بدلے پیاز، لہسن، مسور اور ساگ مانگنے لگے تھے۔ سورئہ بقرہ میں اس کا بیان کیا گیا ہے۔
پیاز میں وٹامنز، فولاد اور دیگر دھاتیں بکثرت موجود ہوتی ہیں جو ہمیں بہت سی بیماریوں سے بچاتی ہیں۔حکماء کے مطابق کسی بھی دوسرے ملک جانے کے بعد سب سے پہلے وہاں کی پیاز کھانی چاہئے۔ اس سے یہ فائدہ ہوگا کہ اگر اس ملک میں کوئی وباء پھیلی ہوئی ہو تو اس سے محفوظ رہیں گے۔
آئیے آپ کو پیاز کے فوائد کے بارے میں بتاتے ہیں
گرمیو ں میں لو لگنے کی صورت میں پیاز کا استعمال بہت مفید ہے۔
جدید تحقیقات سے یہ معلوم ہوا ہے کہ پیاز کا مسلسل استعمال دل کے امراض میں مبتلا ہونے سے محفوظ رکھتا ہے کیونکہ اس کی وجہ یہ بیان کی جاتی ہے کہ اس میں ایک جزو پروسٹا گلنڈن پایا جاتا ہے جو دل کی حرکت کو متواز رکھتا ہے۔
اپنی آواز کو سر یلا بنانے کے لئے قدیم دور سے ہی پیاز کا استعمال چلا آرہا ہے اور خاص طور پر موسیقی سے وابستہ لوگ اس طریقہ کو اپنائے ہوئے ہیں۔
ماہرین کے مطابق پیاز میں کیمیائی جزو تھیال ڈی فائیڈ پایا جاتا ہے جو جراثیم کش ہے۔
بے خوابی کے مرض میں اگر پیاز کا شوربہ استعمال کیا جائے تو خواب آور گولیوں سے زیادہ مفید ثابت ہو سکتا ہے۔
پیاز حد درجہ مصفی خون ہے۔
چہرے اور جسم پر سیاہ داغ دھبے ہوں تو پیاز کا عرق لگانے سے یہ داغ دور ہو سکتے ہیں۔
پیاز کے پانی میں شہد ملا کر آنکھوں میں ٹپکانے سے آنکھوں کے اکثر امراض سے نجات اور حفاظت رہتی ہے جن میں نظر کی کمزوری ایک اہم مرض ہے اس سے آنکھیں صاف ہو جاتی ہیں۔
قدیم اطباء کے مطابق اگر بچھو یا بھڑ کاٹ لے تو پیاز کا پانی وہاں لگایا جائے اس سے درد دور ہو جائے گا اور زہر اثر نہیں کرے گا۔
اگر آدھی چھٹانک پیاز کا پانی صبح باقاعدگی سے استعمال کرتے رہیں تو گردہ و مثانہ کی پتھری ریزہ ریزہ ہو کر خارج ہو جاتی ہے۔
نکسیر بہنے کی شکایت میں اگر پیاز کا رس ایک دو قطرہ ناک میں ڈالیں تو نکسیر بند ہو جائے گی۔
پیٹ کے درد کی تکلیف میں پیاز کو آگ میں بھون کر اور اس کا رس نکال کر گرم گرم پیا جائے تو پیٹ کے درد کو شفاء حاصل ہوگی۔
برسات کے موسم میں پیاز کا زیادہ استعمال کرنے سے موسمی بیماریوں سے حفاظت رہتی ہے۔
احتیاطی طور پر پیاز کو سرکہ میں ملا کر کھائیں زیادہ نفع دیتا ہے کیونکہ صرف پیاز کھانے سے منہ سے بدبو آنے لگتی ہے اور بعض لوگوں کا معدہ پیاز میں موجود کچھ مخصوص مادوں سے حساس ہوتا ہے جس کی وجہ سے انہیں معدے میں تکلیف محسوس ہوتی ہے ایسے لوگوں کو پیاز کا استعمال نہیں کرنا چاہیے۔یاد رہے کہ رات کو کھانے میں سلاد کے ساتھ کچا پیاز ہر گز استعمال نہیں کرنا چاہئے۔

یہ بھی پڑھیں:  آپ کی صحت مند زندگی کیلئے آملہ کے فوائد