vitamin vegetable

وٹامنز کی کمی سے پیدا ہونے والے امراض

EjazNews

ہمارے جسم کو ہر عمر کے لحاظ سے وٹامنز کی الگ الگ ضرورت ہوتی ہے۔ اور ان کی کمی بیشی ہمارے جسم میں مختلف پیچیدگیاں پیدا کرتی ہے۔ دوائیں چاہیں ایلو پیتھک ہو ، ہومیو یا حکیم کی ہوں وہ ان وٹامنز کی تعداد کو پورا کر کے ہمارے جسم کو اپنی اصل حالت میں لاتی ہیں۔ یہ وٹامن ہمارے اجسام پر کس طرح اثر انداز ہوتے ہیں اور ان کی کمی ہمارے جسموں کو کیا نقصان پہنچاتی ہیں اس بارے میں اس تحریر پر غور کرتے ہیں۔

وٹامن اے کی کمی سے بڑھوتری میں کمی، قوت مدافعت میں کمی اور کمزوری، ضعف عامہ، ضعف بصارت وغیرہ کے عوارض پیدا ہو جاتے ہیں۔ماہرین کے مطابق اس کی کمی سے مہا سے اور پھنسیاں پیدا ہوتی ہیںجلد کمزور بھوسی دار اور جھرجھری ہو جاتی ہے۔

وٹامن بی کی کمی سے فالج وغیرہ ،معدہ و انتڑیوں کے امراض، قبض اور پیچس وغیرہ کے امراض پیدا ہو جاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  ہائی اور لو بلڈ پریشر کو صرف 30منٹ کی محنت سے قابو میں رکھا جاسکتا ہے

وٹامن سی کی کمی سے کمزوری اور مسوڑھوں کا عارضہ ہوجاتا ہے۔ بدن کے مختلف حصوں سے جریان خون ہونے لگتا ہے۔ مسوڑھے خراب ہوجاتے ہیں، ہڈیوں میں ٹیڑھا پن ہوجاتا ہے اور ہڈیوں کی پوری طرح نشوونما نہیں ہوتی۔

وٹامن سی کی کمی سے ہڈیوں اور دانتوں کی کمزوری، دانتوں کا دیر سے نکلنا، ہڈیوں کا ٹیڑھا پن، سوکھا پن اور تشنج وغیرہ کے عوارض پیدا ہوتے ہیں۔

وٹامن ای کی کمی سے مردوں اور عورتوں میں قوت تولید کم ہو جاتی ہے۔ عورتوں میں بانجھ پن اور حمل گرنے جیسے امراض پیدا ہو جاتے ہیں۔

وٹامن کی کمی سے جگر کے امراض پیدا ہو تے ہیں۔

آئیے وٹامن کے بعد دیکھتے ہیں انسانی اجسام کو ایک دن میں کتنی کیلوریز چاہیے ہوتی ہیں جس سے اس کا جسم ہشا ش بشاش اور توانا رہ سکے ۔

کیلوریز

جس آدمی کا زیادہ تر بیٹھنے کا کام ہو، اسے تقریبا 2000کیلوریز کی ضرورت ہوتی ہے۔ محنت مزدوری کرنے والے آدمی کو 3000ہزار کیلوریز کی ضرورت ہوتی ہے۔ایک شخص جس قدر کیلوریز غذا کی صورت میں کھاتا ہے ،اگر وہ سارے استعمال نہ ہوں تو جسم موٹا ہوجاتا ہے۔ ہرغذا جو ہم کھاتے ہیں مختلف چیزوں کی بنی ہوتی ہے اور ان چیزوں میں مختلف بنیادی اجزاءپائے جاتے ہیں۔ جن کا ہماری غذا میں متوازن مقدار میں ہونا ضروری ہے۔ غذا میں بنیادی اجزاءکی کمی بیشی ہو جائے تو وہ ٹھیک طرح سے کام نہیں کرے گی۔ غذا بگڑ جائے گی اور ہم بیمار ہو جائیں گے لہٰذا تندرست رہنے کے لئے غذا کا متوازن ہونا بہت ضروری ہے۔

قارئین کی دلچسپی کے لیے ہم بتانا چاہتے ہیں کہ کون سے غذاﺅں میں کتنے وٹامن ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  دل کی حفاظت کیجئے ،دل کی صحت سے ہی زندگی کی صحت ہے

وٹامنز والی غذائیں

وٹامن اے

مکھن، دودھ، کریم، سبزیاں، انڈے کی زردی، کلیجی ، گاجریں، زرد پھل مثلاً سنگتر ہ وغیرہ

وٹامن بی

چھلکے والی دال، پنیر ، مکھن، ٹماٹر، شلغم،پھل ، سبزیاں وغیرہ

وٹامن سی

پھلوں کا رس، تازہ پھل، انگور، مالٹا، لیموں، ہری سبزیاں، گوبھی ، ٹماٹر ، تازہ گوشت، تازہ دودھ وغیرہ

وٹامن ڈی

بالائی، مکھن ، انڈو زردی وغیرہ

وٹامن ای

مکئی ، مٹر، روغن، دُودھ ، چنے ، گیہوں ، مچھلی، گوشت، انڈے کی زردی وغیرہ

وٹامن کے

پالک، گوبھی، ٹماٹر، کلیجی، سویابین وغیرہ

یہ ہمارے روز مرہ کے استعمال کی اشیاءہیں جن سے مستفید ہو کر ہم اپنے جسم کو بیماریوں سے بچا سکتے ہیں ۔