دنیا کے کسی ائیر پورٹ پر پاکستانی مسافر پھنسے ہوئے نہیں ہیں: معاون خصوصی

EjazNews

وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا نے میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ ملک بھر میں مریضوں کی تعداد 1625ہو گئی ہے اور وائرس سے 21افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ 99نئے کیسز بھی سامنے آچکے ہیں۔ جبکہ 5افراد کے مرنے کی بھی وہ تصدیق کر چکے ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ لوکل ٹرانسمیشن کے کیسز کی تعداد بڑھ رہی ہے۔783کروناکے مریض مختلف ہسپتالوں میں داخل ہیں۔ 783میں سے 10مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔ عالمی سطح پر بھی کرونا وائرس پھیل رہا ہے۔
اپنی پریس کانفرنس میں انہوں نے ایک ٹینڈرڈ کا بھی ذکر کیا کہ اگر پاکستان میں موجود کسی شخص کے پاس کرونا وائرس سے متعلق کوئی آئیڈیا ہے جس سے حکومت اس پر قابو پا سکتی ہے تو وہ حکومت پاکستان کو ایچ ای سی کی تواسط سے وہ آئیڈیا بھیجے اگر حکومت سمجھتی ہے کہ وہ عمل کے قابل ہو گا تو اس شخص کی مالی معاونت کی جائے گی کہ وہ اس کو بہتر طریقے سے کرے ان کا کہنا تھا کہ یہ مالی معاونت خاصی ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:  کارکے معاہدہ کیا تھا اور پاکستان پر جرمانہ کیوں ہوا؟

جب پریس کانفرنس میں چیئرمین این ڈی ایم اے کا کہنا تھا کہ 6اپریل سے پہلے ایک لاکھ حفاظتی سامان ہمارے پاس پہنچ جائے گا۔15 اپریل سے پہلے ایک لاکھ 50 ہزار حفاظتی سامان ہمیں موصول ہو جائے گا۔اس کے علاوہ لاہور میں لیب کا بھی انہوں نے ذکر کیا کہ وہ جلد کام کرنا شروع کر دے گی۔
جبکہ اسی پریس کانفرنس میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ مسافر ٹرانسپورٹ اور ریلوے کو یکم اپریل تک کھولنے میں کوئی صداقت نہیں۔ اس بارے میں سوشل میڈیا پر آنے والی خبروں میں کسی قسم کی کوئی صداقت نہیں ہے۔ اندرون اور بیرون ملک پروازیں تاحکم ثانی بند ہیں۔دنیا کے کسی ائیرپورٹ پر پاکستانی مسافر پھنسے ہوئے نہیں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  حکومت کی جانب سے اخبارات اور ٹی وی کو جو اشتہارات دئیے جاتے ہیں، اس کی ادائیگیاں فوراً ہوتی ہیں:وفاقی وزیر اطلاعات

اپنا تبصرہ بھیجیں