kashif-abbasi

پیمرا کی طرف سے کاشف عباسی اور آف دی ریکارڈ پر 60دن کی پابندی عائد

EjazNews

گزشتہ دنوں اے آروائے نیوز پر رات کی نشریات میں ”آف دی ریکارڈ “پروگرام نشر ہوا جس میں وفاقی وزیر اپنے ساتھ ایک فوجی بوٹ بھی لے کر آئے تھے اور سارے پروگرام کے دوران یہ بوٹ مہمانوں کے ساتھ میز پر پڑا رہا۔ پروگرام آف دی ریکارڈ میں وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واڈا، پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رہنما قمر زمان کائرہ اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما جاوید عباسی بطور مہمان موجود تھے۔
صورتحال اس وقت انتہائی سنجیدہ صورتحال اختیار کر گئی جب وفاقی وزیر نے فوجی بوٹ میز پر رکھتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی نے لیٹ کر بوٹ کو عزت دی ہے۔ان کے جملوں اور میزبان کا صورتحال کو مناسب صورت پر ہینڈل نہ کرنے پر پیمرا نے نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ” پروگرام کے دوران فیصل واڈا کی جانب سے اٹھائے گئے اعتراضات انتہائی غیرسنجیدہ اور تضحیک آمیز تھے بلکہ انہوں نے ایک ریاستی ادارے کے وقار کو مجروح کرنے کی بھی کوشش کی ہے۔پیمرا نے کاشف عباسی کے رویے کو بھی انتہائی غیرپیشہ ورانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ میزبان نے لائیو شو کے دوران مہمان کی جانب سے اس غیراخلاقی حرکت پر مداخلت یا انہیں روکنے کی کوشش نہیں کی اور اس کے بجائے معاملاے پر مسکراتے رہے۔ بادی النظر میں ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ایک ریاستی ادارے کو غیرضروری طور پر بحث کا حصہ بنا کر اس کے وقار کو مجروح کرنے کی کوشش کی اور اس عمل کو پیمرا کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی قرار دیا۔“

یہ بھی پڑھیں:  اس دھرنے کا وقت بہت اہم ہے، دھرنے کی وجہ سے کشمیر کے ایشو سے ساری توجہ ہٹ چکی ہے:وزیراعظم عمران خان

پیمرا نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر پروگرام آف دی ریکارڈ پردو ماہ کی پابندی عائد کردی ہے۔اس کے ساتھ ساتھ پروگرام کے میزبان پر بھی میڈیا پر آنے کی پابندی عائد ہے۔ کاشف عباسی ان 60دنوں تک کسی بھی ٹی وی چینل پر مبصریا ماہر کی حیثیت سے شرکت نہیں کرسکتے۔
یاد رہے:پروگرام میں فوجی بوٹ لانے پر قمر زمان کائرہ اور جاوید عباسی احتجاجاً پروگرام ادھورا چھوڑ کر چلے گئے جس کے بعد سے وفاقی وزیر فیصل واڈا پر تنقید ہو رہی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں