family

انمول رشتوں کی حفاظت کیجئے

EjazNews

زندگی میں رشتوں کی وہی اہمیت ہے جو جسم میں روح کی سمجھی جاتی ہے۔ رشتے ہی ہیں جو ہماری زندگی خوبصورت بناتے ہیں خوشی ہو یا کوئی غم کا لمحہ اپنے پیاروں کی قربت سے ہمیں جوڈھارس ، اعتما د اور سکون ملتا ہے اس کا کوئی مول نہیں۔ قربانی ، محبت اور باہمی یگانگت ان رشتوں کو دوام بخشتی ہے۔ شادی کے بعد ہر عورت کی زندگی میں کچھ نئے رشتے بھی شامل ہو جاتےہیں یوں ایک نئے خاندان کی تشکیل کا آغاز ہوتا ہے اوراصل امتحان ہی تب شروع ہوتا ہے جب آپ سسرال کے افراد کو بھی سمجھ کر چلنے کی کوشش کرتی ہیں اور بچوں کی پرورش کے ساتھ شوہر کی ضروریات کو حتیٰ الامکان پورا کرنے کی سعی کرتی ہیں۔ روز مرہ فرائض کی ادائیگی کے ساتھ اپنی ذات سے وابستہ افراد خانہ سے تعلق کو مضبوط بنائےرکھنا کچھ مشکل نہیں ،بات صرف ذرا سی سمجھداری کی ہے۔ آئیے ان نکات پر عمل کر کے دیکھیں جو بظاہر بہت سادہ ہیں لیکن عملدرآمد کے بعد آپ دیکھیں گی کہ آپ کی زندگی میں ایک ڈسپلن قائم ہو گیا ہے اور وقت کی درست تقسیم بھی مشکل نہیں رہی۔
کھانا پکانا:
ضروری نہیں ہے کہ آپ کھانے میں ڈھیر ساری ڈشوں کے انبار لگا دیں چاہے آپ ایک ہی ڈش پکائیں مگر اپنے ہاتھوں سے بنائیں۔ روانہ ایک جیسا کھانا نہ پکائیں موسم کے حساب سے تیار کیا گیا کھانا سب کو پسند بھی آئے گا اور آپ کو سراہا بھی جائے گا۔ اس کے علاوہ چھٹی والے دن ذرا خاص اہتمام کریں اور کھانے کو سلیقے اور اہتمام سے پیش کریں تاکہ گھر والے آپ کے مداح ہو جائیں۔
مل کر کھانا کھائیں:
ہمیشہ اپنی یہ کوشش رکھیں کہ الگ الگ سب لوگ کھانا نہ کھائیں بلکہ جب سب واپس آجائیں تو مل کر کھانا کھائیں کھانا کھاتے وقت آپ آپس میں ڈسکشن کریں لیکن ایسی باتیں نہ کریں جس سے بات بحث مباحثے تک پہنچے اور ماحول خراب ہو۔ دلچسپ باتیں کریں تاکہ ماحول ہلکا پھلکا رہے۔
گھریلو مصروفیات:
آپ اگر گھر کے کاموں میں بہت مصروف رہتی ہیں تو چند کام ایسے بھی ہوتے ہیں جس کو کر کے بچے خوش ہوتے ہیں بچے کچھ بڑے ہیں تو ان کو کام کرنے دیں جیسے کہ واشنگ مشین میں کپڑے ڈالنا، کار دھونا، ویکیوم کرنا ایسے کام ہیں۔ جسے بچے شوق سے کرتے ہیں توان کو اپنے ساتھ مصروف رکھیں اس سے بچے کام سیکھ بھی جائیں گے اور گھریلو امور میں دلچسپی بھی لے لیں گے۔
ورزش:
روزانہ کچھ دیر کیلئے ورزش ضرور کریں اور اس وقت اپنے بچوں کو بھی ساتھ رکھیں اور ہوسکے تو اپنے شوہر کو بھی ساتھ رکھیں۔ اس سے پوری فیملی بھی اس اچھی عادت کو اپنائے گی اور ساتھ وقت گزارنے کا بھی اچھا موقع ہے۔ جو آپ کو تمام دن تروتازہ رکھے گی۔
نماز کی عادت:
اپنے گھر میں نماز پڑھنے کی عادت ڈالیں اور اپنے بچوں کو اپنے ساتھ نماز پڑھائیے ۔ آپ خود دیکھیں گے آپ کے گھر کا ماحول خود بخود آئیڈیل ہو جائے گا۔ عبادت سے ذہن کو سکون ملتا ہے اور زندگی میں نظم و ضبط بھی پیدا ہوتا ہے۔
باغبانی:
گھر کو اگر پودوں اور پھولوں سے سجادیا جائے تو اس کی خوبصورتی اور سکون میں چار چاند لگ جاتے ہیں ہرا بھرا گھر اگر اپنے ہاتھوں سے سجایا گیا ہو تو پھر اس کی بات ہی کچھ اور ہوتی ہے۔ پھول پودوں سبزے سے پیار کریں۔آپ بچوں کو بھی پودوں کی دیکھ بھال کرنا سیکھائیں۔ پودوں کو پانی دینا، ان کی حفاظت کرنا سکھائیے۔ اس طرح گھر کے دیگر افراد میں بھی باغبانی کا شوق پیدا ہوگا جو صحت مند مشغلہ بھی ہے۔
ٹی وی دیکھنا:
ایسے پروگرام دیکھیں جو دلچسپ ہونے کے ساتھ ساتھ معلوماتی بھی ہوں ،اس دوران اہل خانہ سے دلچسپی کے موضوعات پر گفتگو بھی کریں یہ وہ بہترین وقت ہے جب آپ اپنے مسائل ڈسکس کر سکتے ہیں۔ معمولی غلط فہمیوں کا ازالہ دوستانہ گفتگو سے کیا جاسکتاہے۔
سیرو تفریح:
ہفتے میں ایک بار آئوٹنگ کیلئے ضرور جائیں۔ ضروری نہیں کہ باہر سے کھانا کھا کر آیا جائے کسی بھی تفریح کی جگہ پر جانے سے آپ تمام گھر والے فریش بھی ہو جائیں گے اور ایک دوسرے کے ساتھ وقت گزارنے سے ایک دوسرے کے اور قریب ہو ں گے، فرصت کے لمحات میں ایک دوسرے سے دل کی باتیں بھی کرسکیں گے۔
شوہر کی دلچسپیوں کا خیال رکھیں:
گھر کو جنت بنانا عورت کے ہاتھ میں ہوتا ہے۔ آپ گھر کو ضرور توجہ دیں۔ بچوں کا خیال رکھیں۔ گھر کے دوسرے افراد کی کیئر کریں سب سے زیادہ اہمیت اپنے شوہر کو دیں ان کےبارے میں سب کچھ جانیے کہ ان کی پسند ناپسند کیا ہے ان کو کس قوت کس چیز کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ فارغ اوقات کو باہمی دلچسپی کے مطابق گزاریں بحث و مباحثہ کی بجائے دلچسپ گفتگو کریں شوہر کے مزاج کو سمجھنے کیلئے انہیں وقت دیں تاکہ ایک مضبوط رشتہ استوار ہو سکے۔ آپ کا گھر سکون کی آمجگاہ بن جائے گا۔
خاندان کے بزرگوں کا احترام کریں:
گھر کا ہر فرد یکساں عزت کے قابل ہے۔ لیکن بزرگ افراد زیادہ توجہ کے مستحق ہوتے ہیں۔ خاندان کے بزرگ افراد سے گھل مل کے رہیں۔ انہیں اخبار پڑھ کے سنائیں ان کے معمولی کام اپنے ہاتھ سے انجام دیں۔ ہر لمحہ یہ احساس دلائیں کہ ان کی موجودگی آپ کیلئے باعث خوشی ہے۔ اچھا اخلاق ایک جادو کی طرح ہے جو آپ کو ہر دلعزیز بنا دیں گے۔ کوئی ناگوار بات ہوجائے تو شائستگی سے نظر انداز کر دیں خوشگوار گھریلو ماحول کیلئے روئیے کو لچکداررکھنا بہت ضروری ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  خاندانی نظام میں عورت کا کردار

اپنا تبصرہ بھیجیں