uma-Hani

حضرت اُم ہانیؓ کا ذکر خیر

EjazNews

یہ حضرت علیؓ کی حقیقی اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی چچیری بہن ہیں۔ فتح مکہ میں مسلمان ہوئیں۔ آپ نے اس روز ان کے مکان میں غسل کیا تھا اور چاشت کی نماز پڑھی تھی۔ انہوں نے اپنے دو عزیز مشرکوں کو پنا ہ دی تھی ۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ان کے پناہ دینے کی وجہ سے پناہ دی۔ (مسند احمد)
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے مسائل دریافت کرلیا کرتی تھیں۔ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم سے ان کو خاص عقیدت اور محبت تھی ۔ فتح مکہ کے زمانے میں آپ ان کے مکان پر تشریف لے گئے اور شربت نوش فرمایا۔ اس کے بعد ان کو دیا، انہوں نے کہا روزے سے ہوں۔ لیکن آپ کا جھوٹا واپس نہیں کرسکتی ہوں۔ آپ سے لے کر پی لیا۔ پھر خود ہی عرض کیا کہ یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم میں روزے سے تھی ۔ آپؐ نے فرمایا اگر روزہ رمضان کی قضا ہے تو کسی دوسرے دن پورا کرلینا اور اگر محض نفل ہے تو اس کی قضا ضروری نہیں ہے۔ چاہے رکھو چاہے نہ رکھو۔ (مسند احمد)
ایک مرتبہ انہوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے دریافت کیا کہ اب میں ضعیفہ ہو گئی ہوں اور چلنے پھرنے میں ضعف معلوم ہوتا ہے اس لیے عمل بتائیے جس کو میں بیٹھے بیٹھے انجام دے سکوں۔ آپ نے ایک وظیفہ بتایا کہ ”سبحان اللہ “ ایک سو مرتبہ ” الحمد للہ “ ایک سو مرتبہ ”اللہ اکبر“ ایک سو مرتبہ ”لا الہ الا اللہ “ ایک سو مرتبہ پڑھ لیا کرو۔ (مسند احمد)

یہ بھی پڑھیں:  حضرت موسیٰ علیہ السلام کی ماں کا ذکر خیر

اپنا تبصرہ بھیجیں