asif-zardari

سابق صدرآصف زرداری کی درخواست پر عدالت نے میڈیکل بورڈ بنادیا

EjazNews

چیف جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس عامر فاروق پر مشتمل بینچ نے جعلی اکاﺅنٹس کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری کی طبی بنیادوں پر رہائی کی درخواست پر سماعت کی۔
سماعت کے دوران چیف جسٹس اطہر من اللہ نے سابق صدر آصف زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک سے پوچھا کہ درخواست کس بنیاد پر دائر کی گئی ہے؟ جس پر انہوں نے جواب دیا کہ درخواست ضمانتیں طبی بنیادوں پر دائر کی گئی ہیں۔
اس پر عدالت نے پوچھا کہ کیا کوئی میڈیکل بورڈ بھی بنایا گیا ہے،جس پرفاروق ایچ نائیک نے جواب دیا کہ جی میڈیکل بورڈ کی رپورٹ بھی درخواست ضمانت کے ساتھ منسلک کی ہے۔
چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دئیے کہ ہم ایسا کرتے ہیں کہ پمزہسپتال کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر کی سربراہی میں میڈیکل بورڈ بنواتے ہیں۔ساتھ ہی عدالت نے 11 دسمبر تک میڈیکل بورڈ سے رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔
سابق صدر آصف زرداری نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا تھا کہ انہیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا جبکہ ان کے اوپر بنائے گئے کیسز جعلی اور من گھڑت ہیں۔درخواست میں کہا گیا کہ آصف علی زرداری دل کے مریض ہیں اور ان کے 3 اسٹنٹ ڈلے ہوئے ہیں جبکہ ان کے سینے سے ہولٹر مانیٹر بھی لگا ہوا ہے تاکہ ڈاکٹر ان کی دھڑکن کو مانیٹر کرسکیں۔درخواست میں لکھا گیا ہے کہ ان کو ذیابیطس کا مرض بھی ہے اور ان کا شوگر لیول اوپر، نیچے خطرناک حد تک ہوتا رہتا ہے، جس کی نگرانی کی ضرورت ہے۔ درخواست گزار کواس کے علاوہ مزید بیماریاں بھی لاحق ہیں، لہٰذا ان کے علاج کے لیے طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت منظور کی جائے۔

یہ بھی پڑھیں:  ملک بھر کے 42کنٹونمنٹ بورڈ زکے اہم انتخابات، شکایات سیل قائم

اپنا تبصرہ بھیجیں