imran-khan-meet

وزیراعظم کیخلاف توہین عدالت کی درخواست مسترد، سینٹ کی خالی نشست پر پی ٹی آئی امیدوار کامیاب

EjazNews

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے وزیراعظم عمران خان کی تقریر کے خلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پر سماعت کی۔
درخواست پر سماعت میں چیف جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ سلیم اللہ خان آپ کو وزیراعظم کی تقریر سے کیا پریشانی ہے؟ کیا آپ منتخب وزیراعظم کا ٹرائل کرانا چاہتے ہیں؟ کیا آپ اس کے نتائج سے آگاہ ہیں؟ کیا آپ وزیراعظم کو نااہل کرانا چاہتے ہیں؟ جس پر درخواست گزار ایڈووکیٹ سلیم اللہ خان نے جواب دیا کہ وزیراعظم نے عدلیہ کی تضحیک کی ہے۔
درخواست گزار کی بات پر چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ عدالتیں تنقید کو خوش آمدید کہتی ہیں
بعد ازاں عدالت نے ایڈووکیٹ سلیم اللہ خان کی درخواست قابل سماعت ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیاگیا۔3 صفحات کا تحریری فیصلہ جاری کیاگیا، جس میں وزیراعظم عمران خان کے خلاف دائر کی گئی درخواست کو مسترد کردیاگیا۔
یاد رہے :درخواست گزار نے موقف اپنایا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے 18نومبر کو جو تقریر کی تھی اس میں اعلیٰ عدلیہ کو اسکینڈلائز کرنے کی کوشش کی گئی تھی۔
حکومت کو دوسری خوشخبری اس وقت ملی جب تحریک انصاف کے امیدوار ذیشان خانزادہ سینٹ کی خالی نشست پر کامیاب ہوگئے۔سینیٹ کی خالی نشست پر انتخاب کا عمل پشاور میں خیبرپختونوا اسمبلی میں ہوا۔
ووٹنگ کے بعد سامنے آنے والے غیر سرکاری نتائج میں تحریک انصاف کے امیدوار کو 104 ووٹ حاصل ہوئے جبکہ متحدہ اپوزیشن کے حمایت یافتہ پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے امیدوار فرزند علی وزیر 31 ووٹ حاصل کرسکے، جبکہ4 ووٹ مسترد کردئیے گئے۔
یاد رہے :جماعت اسلامی نے سینٹ کی خالی نشست میں اپنے ووٹوں کو استعمال نہیں کیا۔
خیبرپختونخوا اسمبلی میں 145اراکین ہیں، جن میں سے مجموعی طور پر 139 اراکین نے ووٹنگ کے عمل میں حصہ لیا۔
ووٹوں کی گنتی ہوئی تو تحریک انصاف کے امیدوار ذیشان خانزادہ کے حصے میں 104 ووٹ آئے جبکہ متحدہ اپوزیشن کے 39 اراکین میں سے 31 ووٹ حاصل ہوسکے جبکہ 4 ووٹ مسترد ہوئے ۔

یہ بھی پڑھیں:  کرونا وائرس سے آگاہی دیں ، خدارا ڈرائے نہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں