imran-khan-green-pakistan

نیا پاکستان زمین پر بعد میں آئے گا پہلے ذہنوں میں آئے گا:وزیراعظم عمران خان

EjazNews

وزیراعظم عمران خان کا کہناتھا کہ اگر آپ سویلائزیشن کا جائزہ لیں تو بڑے بڑے ایمپائر تباہ ہو گئے۔ ان کا نام و نشان ہی ختم ہوگیا۔ جب کوئی قوم اپنی آنے والی نسلوں کا نہیں سوچتی تو اس کیلئے بربادی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میں لاہور میں بڑا ہوا ، لاہور کا پانی ہم نلکے سے پیا کرتے تھے لاہور کا پانی میٹھا تھا ۔ 30-35سال پہلے لاہور ایک صاف ستھرا شہر تھا۔ لاہور میں آج بوڑھے اور بچوں کی زندگیو ں کو خطرہ ہے۔ پولوشن لیول اس حد تک پہنچ گیا ہے کہ سالوں بعد پتہ چلتا ہے کہ کتنے لوگوں کو نقصان ہوتا ہے۔ لاہور دنیا کو دوسرا یا تیسرا آلودہ شہر بن گیا ہے۔ جب لاہور کی ڈویلپمنٹ ہورہی تھی تو کسی نے نہیں سوچا کہ درختوں سے کیا نقصان ہو رہا ہے لاہور کے 70فیصد درخت کاٹ دئیے گئے۔ کنکریٹ بنادی گئی۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کوئی گورنمنٹ اکیلے یہ کام نہیں کرسکتی ۔ ہمارے گھر کے سامنے والی نہر سے لوگ پانی پیا کرتے تھے، راوی اور نہر سیوریج بن گیا ہے۔ یہ پانی انڈر گراﺅنڈ واٹر میں جاتا ہے اور اس کا کبھی کسی نے نہیں سوچا۔ یہ کلین گرین گورنمنٹ اکیلے نہیں کر سکتی۔ ان کا کہنا تھا سب مل کر اس کو ٹھیک کر سکتے ہیں۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میں تقریباً ساری دنیا دیکھ چکا ہوں سارا پاکستان دیکھ چکا ہوں ، یہاں ہر قسم کا پھل اگ سکتا ہے، یہاں تیل، گیس کے ذخائر ہیں، سونے اورتانبے کے ذخائر ہیں۔ کہتے ہیں میں پاکستان 10ٹاپ ملکوں میں ہے جہاں سب سے زیادہ معدنیا ت ہیں۔ یہی پاکستان سونا اگلے گا۔ یہی پاکستان ٹورازم کا ہب بنے گا۔ جوخوبصورت اللہ تعالیٰ نے پاکستان کو دی ہے شاید ہی کسی ملک کے پاس ہو۔
ان کا کہناتھا پاکستان کے نوجوانوں نے اس میں بھرپور شرکت کرنی ہے۔ ان کا کہنا تھا ہم پاکستان کا سب سے بہترین بلدیاتی نظام لے کر آرہے ہیں۔ پنجاب اور خیبر پختونخوا میں جونظام لے کر آرہے ہیں پہلی دفعہ نچلی سطح پر اختیارات آجائیں گے۔ پہلی دفعہ ایسا نظام آئے گا ،گاﺅں کے لوگ خود اس میں حصہ لیںگے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا نیا پاکستان زمین پر بعد میں آئے گا پہلے ذہنوں میں آئے گا۔ اللہ قرآن میں کہتا ہے میں کبھی کسی قوم کی حالت نہیں بدلتا جب تک وہ خود اپنی حالت بدلنے کی کوشش نہ کرے۔ جب ہم فیصلہ کرلیں گے ہم نے اپنے ملک کو کسی اور طرح چلانا ہے ہم نے اپنا قبلہ درست کرنا ہے۔ اللہ کی برکت بھی آئے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ گورنمنٹ کی پوری توجہ اس پر ہے اور مجھے خوشی ہے کہ ہمارے لوگ آہستہ آہستہ ٹیکس دے رہے ہیں اور پیسہ آرہا ہے۔ جیسے جیسے پیسہ آئے گا ہم نے لوگوں پر پیسہ لگانا ہے۔ ہم نے اپنے دریا صاف کرنے ہیں۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ میں جب سنگا پور گیا تو ان کے پاس ایک ہی دریا ہے جو سیوریج ڈم بنا ہوا تھا۔ لیکن انہوں نے اسے صاف کرلیا۔ اور وہاں اب مچھلیاں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  لاہور سے کراچی جانے والا طیارہ گر کر تباہ

ان کا کہنا تھا کہ شوکت خانم بنتا ہی نہ اگر پاکستان کے سکول کے بچے اس میں بھرپور حصہ نہ لیتے۔ پاکستان کو صاف کرنے کیلئے یہ بچے بھرپور حصہ لیں گے۔ پاکستان وہ ملک بنے گا جس کو ساری دنیا دیکھے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں