imran-khan-meet

چار سال میں پہلی مرتبہ کرنٹ اکاﺅنٹس سر پلس ہوگیا:وزیراعظم

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے اپنے سوشل اکاﺅنٹ پر قوم کو خوشخبری سنائی ہے کہ پاکستان پچھلے چار سالوں میں پہلی دفعہ کرنٹ اکاﺅنٹ بیلنس میں پاکستانی خزانہ سرپلس کی سطح پرآگیا ہے۔ اس کے علاوہ انہو ں نے اپنے ٹویٹ میں برآمند کنندگان کو مبارکباد پیش کی ہے کہ 2018کی نسبت برآمدات میں 9.6فیصد اضافہ ہو چکا ہے۔ اور انہیں مزید کام کرنے کی ترغیب بھی دی ہے۔
ورلڈ بینک نے بھی اپنی ایک رپورٹ میں ایشیا میں پاکستان کو سب سے زیادہ اصطلاحات کرنے والا ملک قرار دیا تھا اور کاروباری درجہ بندی میں پاکستان کو 28پوائنٹ بہتردرجہ پر لائے تھے۔

ایک اہم نقطہ جو یہاں پر قابل ذکر ہے وہ یہ ہے کہ اگر حکومت کے خزانوں میں بہتری آرہی ہے تو اس کا کچھ فائدہ عوامی سطح پر بھی دیا جانا چاہئے۔ عوام مہنگائی کی چکی میں پس چکے ہیں۔ ٹیکس نیٹ ورک میں سب سے زیادہ سفید پوش طبقہ پس رہا ہے ۔ اور کسی ملک میں ریڑھ کی ہڈی بھی یہ سفید پوش طبقہ ہی ہوتا ہے۔ سب سے زیادہ بچتیں سفید پوش طبقہ ہی کرتا ہے۔
پی ٹی آئی کے برسر اقتدار آنے کے بعد سے مہنگائی میں ہوشربا اضافہ ہوا ہے۔ اس کااحساس وزیراعظم کو بھی ہے جس کا وہ اکثر و بیشتر تذکرہ بھی کرتے رہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  دہشت گرد کلبھوشن یادیو کو دوسری مرتبہ قونصلر رسائی :پاکستان نے ایک مرتبہ پھر اخلاقی برتری ثابت کردی

وزیراعظم عمران خان نے لکھا ہے گزشتہ مالی سال کےمقابلے میں رواں مالی سال کےابتدائی 4 ماہ کےدوران کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں 73.5% کمی آئی۔اکتوبر 2019 میں اشیاء و خدمات کی برآمدات کا حجم پچھلے ماہ سے 20% جبکہ اکتوبر 2018 کے مقابلے میں 9.6% زیادہ رہا۔میں اپنے برآمدکندگان کومبارک دیتا ہوں اورانکی حوصلہ افزائی کرتاہوں۔

پاکستانی معیشت بالآخر درست سمت میں نکل پڑی ہے کیونکہ ہماری متعدد اصلاحات بار آور ثابت ہورہی ہیں: 4 برس میں پہلی مرتبہ پاکستان کاکرنٹ اکاؤنٹ اکتوبر 2019 میں خسارے سےنکل کر سرپلس ہوا ہے اور ستمبر 2019 کے 284$- ملین اور اکتوبر 2018 کے 1280$- ملین مقابلے میں 99$+ ملین رہا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں