hazrat memona

حضرت میمونہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا کا ذکر خیر

EjazNews

یہ بیوہ تھیں لوگوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ذکر کیا، آپ عمر ے کےلئے تشریف لے جارہے تھے۔ مقام سرف میںقیام فرمایا۔ حضرت میمونہ ؓ بھی وہاں موجودتھیں اسی مقام میں آپ کا نکاح ہوا اور رسم عروسی ادا ہوئی اور اس کے بعد آپ نے احرام باندھا۔ یہ آپ کا آخری نکاح تھا اور حضرت میمونہ ؓ سب سے آخری بیوی ہیں۔ (طبری)
یہ عجیب حسن اتفاق ہے کہ اسی مقام میں نکاح ہوا اور ایک طویل عرصے کے بعد اسی مقام سرف میں حضرت میمونہؓ کا انتقال ہوا ۔ (بخاری)
حضرت ابن عباس رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے جنازے کی نماز پڑھائی اور قبر میں اتارا جب ان کا جنازہ اٹھایا گیا تو حضرت ابن عباسؓ نے فرمایا یہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی بیوی ہیں جنازہ کو زیادہ حرکت مت دو۔ با ادب اور آہستہ لے چلو۔ (بخاری)
یہ بڑی خدا سے ڈرنے والی بہت یاد الٰہی اور عبادت گزار ی کرنے والی خدا پرست تھیں۔ حضرت عائشہؓ نے ان کے بارے میں فرمایا ”انھا کانت من اتقانا للہ واوصلنا للرحم “ (اصابہ) میمونہ خدا سے بہت ڈرتی اور بہت صلہ رحمی کرتی تھیں۔
احکام نبوی کی تعمیل ہر وقت پیش نظر رکھتی تھیں اللہ کے راستے میں غلام آزاد کرنے اور خیرات دینے کو بہت پسند کرتی تھیں۔

یہ بھی پڑھیں:  ایک انصاری خاتون کا ذکر خیر

اپنا تبصرہ بھیجیں