kashmir-reap

کشمیریوں کو قتل اور کشمیری عورتوں کا ریپ کرنا چاہیے: سابق بھارتی جنرل سنہا

EjazNews

کیا اب بھی کسی کو انڈین فوج کی سوچ پرشک ہے کہ وہ کشمیر میں کس ظلم و بربریت کامظاہرہ کررہی ہوگی۔ اس کرفیو کے دوران کتنی ماﺅں کی گودیں اجڑی ہوںگی اور کتنی عورتیں ریپ کا شکار ہوئی ہوں گی ، کیا اب بھی کسی کو شک ہے۔
انڈیا میڈیا میں چلنے والے ایک ٹاک شو میں کشمیریوں کے ساتھ جس نفرت اور حقارت کا اظہار کیا گیا ہے اورکرنے والی فوجی جرنیل تھے اس سے کسی کو اب کسی قسم کے شک میں نہیں رہنا چاہیے کہ نفرتوں کی اس جنگ میں کشمیر کس طر ح جل رہا ہے اور یہ کرفیو وہاں پر کس طرح نفرتیں پھیلا رہا ہے۔ انڈیا کی متشدد حکومت کو کشمیریوں سے کوئی غرض نہیں ہے وہ تو کسی طرح سے ان کو نیست و نابود کردینا چاہتے ہیں۔
تین ماہ سے زائد کا عرصہ بیت چکا ہے اور کشمیری مسلسل کرفیو میں زندگی گزار رہے ہیں کیا دنیا میں کسی اور ملک کے میں ایسا ہوا ہے کہ آپ کسی کو اپنا حصہ بنانا چاہتے ہوں اورتین ماہ تک وہاں پر کرفیو لگا کر رکھیں۔
دنیا بھرسے اب یہ آوازیں اٹھنا شروع ہو چکی ہیں کہ انڈیا کی پرتشدد حکومت اس معاملے کو نیوکلیر جنگ کی طرف لے جارہی ہے ۔ 9لاکھ فوج کے ذریعے سے کشمیریوں کے حقوق کس طرح غصب کیے جارہے ہیں اس کا اندازہ انڈین فوج کے جرنیل کی گفتگو سے ہوتا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں:  جنوبی ایشیاءکے استحکام و خوشحالی کو مسئلہ کشمیر سے جدا نہیں کیا جاسکتا :ترک صدر طیب اردگان


وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ایسے بیانات قاتل اورغاصب مودی حکومت کے ان دعووں کی کھلی تردیدہیں کہ کشمیر میں زندگی معمول پرآگئی ہے۔سلام پیش کرتے ہیں اپنی کشمیری ماوں اوربہنوں کوجنہوں نے جرات، شجاعت اوربہادری سے بھارتی جبر و ظلم کا مقابلہ کیا۔جدوجہدآزادی میں ان کی قربانیاں اورخدمات تاریخ کاناقابل فراموش باب ہیں۔

بھارتی فوجی بی جے پی کے کارندے بن چکے ہیں۔عالمی برادری بھارتی فوج کے ایسے ذہنی بیماروں اور انسانیت کے مجرموں کے خلاف سخت درعمل کا اظہار کرے۔
بھارتی ریٹائرڈ جنرل کی ٹی وی پر کشمیری خواتین کے ریپ کی حمایت کے گھٹیا بیان کی شدید مذمت کرتے ہیں۔اخلاق سے عاری اور فسطائیت سے بھرپور یہ سوچ مودی کے نازی ازم کا ناقابل تردید ثبوت ہے۔
وزیرسائنس فواد چوہدری نے لکھا ہے کہ ریپ کو بطور جنگی ہتھیار استعمال کرنے کی وکالت کوئی بھی شخص نہیں کر سکتا لیکن بھارتی جنرل سنہا نے ٹی وی پر بیٹھ کر جس ڈھٹائی اور بے حیائی سے کشمیری عورتوں کے ریپ کی بات کی اس نے ثابت کیا کہ وہ کس قدرنیچ اور گھٹیا سوچ کا مالک ہے، ہر شخص خصوصاً خواتین کو اس بیان پر شدید ردعمل دینا چاہئے۔

یہ بھی پڑھیں:  امریکہ اور شمالی کوریا ایک مرتبہ پھر آمنے سامنے

اپنا تبصرہ بھیجیں