fat man

صحت برقرار رکھنے کیلئے اپنا وزن کم کیجئے

EjazNews

اپنی صحت کا خیال رکھنے والے سبھی لوگ اپنے گھروں میں وزن چیک کرنے والی مشین رکھتے ہیں ۔آپ بھی اپنا وزن کرتے رہیں۔ اپنا وزن کرتے ہوئے بھاری بھرکم کپڑے مت پہنئے، کوئی کوٹ یا سویٹر نہیں ہونا چاہیے، ہلکے پھلکے کپڑوں میں کیا گیا وزن حقیقت کے قریب رہتا ہے۔ یاد رکھئے آپ کا وزن دن بھر میں کم اور زیادہ ہوتا رہتا ہے۔ شام کے وقت عموماً وزن زیادہ ہوتا ہے۔ اپنا وزن چیک کرنےکا سب سے بہتر وقت صبح کا اور وہ بھی ناشتے کے بغیر ۔ بہرصورت اگر آپ محسوس کریں کہ آپ کا وزن زیادہ یا کم ہو رہا ہے تو ضروری ہے کہ ہمیشہ ایک جیسی صورت حال اور وقت میں اپناوزن کیا کریں۔
کیا موٹاپا موروثی ہے:
ایک سوال ماہرین کے پیش نظر رہا ہے کہ کیا موروثیت کا کردار موٹاپے کا سبب بنتاہے۔ اگرچہ بہت سے لوگ مسلسل اسی بات میں یقین رکھتے ہیں کہ جین موٹا پا لانے میں اہم کر دار ادا کرتا ہے لیکن سائنسی تحقیق کے سامنے کوئی ایسی شہادت نہیں آئی جس کی بنیاد پر جین کو موٹاپے کا الزام دیا جاسکے۔ آپ اضافی وزن چکنائی والی غذائیں معتدل حد تک کم کی جائیں تو آپ کے بدن کا میٹا بولزم بہتر انداز میں کام کرے گا اور آپ اپنا وزن مناسب سطح پر لا سکتے ہیں۔
وزن کم کرنے کے 20طریقے:
اگر آپ کا وزن معیاری حدود سے زیادہ ہے تو آپ کے لیے اپنا وزن کم کرنا اس لیے ضروری ہے کہ آپ کو دل کی بیماری کا خطرہ نہ ہو۔ بہت سے لوگ کامیابی کے ساتھ اپنا وزن کم کر لیتے ہیں لیکن کچھ ہفتوں کے بعد وہ پھر سے پہلے وزن کی طرف چل پڑتے ہیں۔ اپنا جسمانی وزن مناسب سطح پر رکھنے کے لیے آپ کو اپنی غذائی عادتوں میں انقلابی تبدیلیاں لانے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اچانک یعنی تیزی سے جسمانی وزن میں کمی کا مطلب جسم میں پانی اور پروٹین کی کمی ہے۔ پانی اور پروٹین کی کمی اچھی تبدیلی نہیں ہوتی کیونکہ چند ماہرین نے مندرجہ ذیل اقدامات تجویز کیے ،جن پر عمل درآمد نہ صرف آپ کو اطمینان بخش نتائج دیتا ہے بلکہ مستقلاً مناسب سطح پر رہتا ہے۔
1۔ اپنی روز مرہ خوراک میں مجموعی کیلوریز میں کمی کر دیں۔ جب تک آپ باقاعدگی سے اپنی مجموعی کیلوریز کم نہیں رکھیں گے، آپ اپنے پسندیدہ مناسب وزن کے قریب نہیں پہنچ سکتے۔
2۔ ورزش شروع کیجئے ، ورزش آپ کے جسم میں ذخیرہ شدہ اضافی کیلوریز اور چکنائی کو جلا دیتی ہے۔
3۔اپنی خوراک میں کیلوریز کی کمی لانے کےساتھ ساتھ اس بات کا خیال رکھیں کہ آپ ایسی غذائیں استعمال کریں جو وٹامنز اور معدنیات سے مالامال ہوں۔
4۔اپنی غذائوں میں چکنائی اور کولیسٹرول کا حصول کم سے کم رکھیں۔ تلی ہوئی چیزوں کو خود سے دور رکھیں۔
5۔بہت سی فیسٹ ڈائٹس اور ڈائیٹ ٹیبلٹس اطمینان بخش کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کرتیں، اس جھنجھٹ میں نہ پڑیں۔ براہ راست سادہ خوراک کھائیں۔
6۔آپ جو کچھ کھاتے ہیں اس کا ریکارڈ رکھیں۔ اگر آپ ایک ہفتہ کی غذائو ں سے اپنا وزن کم کرنے میں کامیاب نہیں ہوئے تو ریکارڈ رکھیں اور غذائوں میں ضروری رد و بدل کریں۔ ریکارڈ کی موجودگی آپ کی پیش رفت آسان بنا دے گی۔
7۔چاکلیٹ اور مٹھائیوں سمیت سنیکس سے پرہیز کیجئے۔
8۔ کھانے کی ٹیبل پر (یا کچن میں)زیادہ وقت نہ رہیں۔ زیادہ دیر رہنے سے آپ زیادہ کھائیں گے۔
9۔ ہمیشہ کم کھانا کھائیں۔ کھانوں کے لیے اپنا رویہ تبدیل کریں۔ کھانا شروع کرنے سے پہلے اپنے آپ سے کہیں۔۔۔چاہے کھانا کتنا ہی لذیذ کیوں نہ ہو۔۔۔مجھے کم کھانا ہے۔میرا عزم ہے کہ کم کھانا کھائوں گا۔
10۔ کھانا شروع کرنے سے پہلے ایک گلاس پانی پینے کی عادت ڈالئے۔ پانی آپ کو بھرے ہوئے معدے کا احساس دے گا۔ چنانچہ آپ کو کم کھانے کی رغبت رہے گی۔
11۔ پارٹیوں میں پیٹو (بسیار خور) بننے سے گریز کیجئے۔ زیادہ کھانے کے لیے کسی کا دبائو قبول نہ کیجئے۔ زیادہ کھانا کھلانے کا رویہ برصغیر میں میزبانی کے آداب میں شامل ہے لیکن کم کھانا مہمان کی صحت کے لیے ضروری ہے۔
12۔ ضروری نہیں ہے کہ آپ کی پلیٹ میں جو کچھ ہے اسے کھایا جائے۔ اضافی کیلوریز جب ایک دفعہ آپ کے بدن میں چکنائی بن کر ذخیرہ ہو جاتی ہیں تو پھر ان سے نجات پانا مشکل ہو جاتا ہے۔
13۔ زیادہ چینی والی غذائوں سےپرہیز کیجئے۔ چائے کے ایک چمچہ مقدار میں چینی 16کیلوریز رکھتی ہے۔ کچھ لوگ روزانہ مختلف مشروبات کے ذریعے 10سے20چائے کے چمچے چینی لے لیتے ہیں۔ انہیں اس بات کا خیال نہیں رہتا کہ وہ بے تحاشا کیلوریز اپنے بدن میں پہنچا رہے ہیں۔
14۔اپنی روز مرہ خوراک میں اناج، پھل اور سبزیوں کی مقدار بڑھائیں۔
15۔ اپنے آپ کو یاد دلاتے رہیں کہ ماضی میں آپ دبلے پتلے تھے ۔ اپنے اس عزم کا ارادہ کرتے رہئے کہ آپ نے دوبارہ اسی کیفیت میں خود کو لے جانا ہے۔ اس کے لیے مجھے اپنی کوشش جاری رکھنا ہیں۔
16۔ زیاد ہ وزن کے بارے میں بے بنیاد مفروضوں کو بھی مت قبول کیجئے۔ مثلاً برصغیر میں کہا جاتا ہے کہ شادی کے بعد وزن ضرور بڑھتا ہے۔
17۔ عمر بڑھنے کے ساتھ وزن بڑھنے کے مفروضے کو بھی مت قبول کیجئے۔ درمیانی عمر کے بعد کئی لوگوں کا وزن اس لیے بڑھ جاتا ہے کہ وہ ورزش یا مشقت والے کام چھوڑ دیتے ہیں۔
18۔ یہ مقولہ یاد رکھئے کہ انسان اپنی صحت سے پہچانا جاتا ہے۔ ایسے افراد کی صحبت چھوڑ دیجئے جن کی زندگی کا مقصد یا تفریح کا ذریعہ محض کھانا پینا ہے ۔ صرف ایسے دو تین دوست رکھئے جو آپ کی طرح زیادہ وزن کے خلاف ہوں۔
19۔اپنی پیش رفت پر نظر رکھئے اور اپنا وزن کم کرلینے پر اپنے آ پ کو احساس طمانیت میں رکھئے۔
20۔اپنا وزن کم کرلینے پر اپنے کپڑوں کو اپنے سائز کے مطابق تبدیل کیجئے۔ جونہی آپ کا وزن دوبارہ بڑھنے لگے اپنا جائزہ لے کر کوتاہی دو رکریں۔
اپنا وزن بڑھا کر دل کے لیے بوجھ مت بڑھائے۔

یہ بھی پڑھیں:  پسینہ ایک بے بو بے رنگ محلول
کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں